مذہب اسلام دنیا کاپہلا مذہب ہے جس نے عورتوں کوانسان سمجھااور مردوں کے برابر حقوق دیے:پروفیسر شکیل صمدانی 

Share Article
womens-day-function

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو)کے بیگم سلطان جہاں ہال میںیومِ خواتین کے موقع پر ’’دستورِہند اور اسلام میں خواتین کے حقوق‘‘ موضوع پر شعبۂ قانون کے سینئر استاد پروفیسر شکیل صمدانی نے توسیعی خطبہ دیا جسے طالبات نے بہت پسندکیا۔اپنے خطاب میں پروفیسر صمدانی نے کہا کہ دستور ہندنے خواتین کووہ سارے حقوق دیے ہیں جو بحیثیت انسان انہیں حاصل ہونے چاہیئے۔ دستور ہندنہ صرف خواتین کو برابری کا حق دیتاہے بلکہ انہیں ترقی کے زیادہ سے زیادہ مواقع بھی میسر کراتاہے۔ ہندوستان کاآئین دنیاکے بہترین دستوروں میں سے ایک ہے۔آزادی کے بعد ہندوکوڈ بِل کے ذریعہ مذہبی بنیادپر خواتین کے ساتھ جو تعصب کیاجاتاتھااسے بھی کافی حدتک دور کردیاگیاہے۔آج خواتین اپنی ترقی کے ساتھ ساتھ ملک کی ترقی میں بھی زبردست تعاون دے رہی ہیں۔
اسلام میں خواتین کو دیے گئے حقوق کا ذکر کرتے ہوئے پروفیسر شکیل صمدانی نے کہا کہ مذہب اسلام دنیا کاپہلا مذہب ہے جس نے عورتوں کوانسان سمجھااور مردوں کے برابر حقوق دیے۔پیغمبر محمد ﷺ نے جب مکّہ میں اپنا مشن شروع کیااس وقت خواتین کی حالت اتنی خراب تھی کہ لوگ اپنی بچیوں کوزندہ دفن کردینے کو ترجیح دیتے تھے لیکن اللہ کے رسولؐ کی محنت اور قرآنی تعلیمات کی بدولت خواتین کی زندگیوں میں انقلاب آیا اور دنیا کی تاریخ میں پہلی بار انہیں جائداد اور ملکیت میں حقوق ملے۔نکاح میں ان کی مرضی کوضروری قرار دیاگیااور حق مہر کولازمی کیاگیا۔

پروفیسر صمدانی نے مزیدکہاکہ انسانوں کی بات توچھوڑیے مذہب اسلام حیوانات کے تحفظ کا بھی خیال کرتاہے اور جانور کوتکلیف دینے کی سزا وہی ہے جوانسانوں کوتکلیف دینے کی ہے۔اگر اسلام نے مردوں کوطلاق کاحق دیاہے تو عورتوں کوبھی’ خُلع‘ کاحق دیا۔جس کے ذریعہ عورت اپنے کورشتۂ ازدواج سے الگ کرسکتی ہے۔اگر مسلم سماج خواتین کے ساتھ ظلم و زیادتی کرتاہے تو اس کے ذمہ دار مسلمان ہیں نہ کہ اسلام۔اخیر میں پروفیسر صمدانی نے کہا کہ قانون نہ تو مردوں کے حق میں ہوناچاہیئے اور نہ ہی عورتوں کے حق میں ، بلکہ انصاف پر مبنی ہوناچاہیئے۔اسلامی قانون نہ صرف انصاف پر مبنی ہے بلکہ دونوں کی جسمانی و روحانی ضرور یات کومد نظر رکھتے ہوئے بنایاگیاہے۔
بیگم سلطان جہاں کی پرووسٹ پروفیسر اسما علی نے پروفیسر صمدانی کا استقبال کرتے ہوئے کہاکہ خواتین کو اپنے حقوق کے لئے بیدار ہوناچاہیئے تاکہ کوئی انہیں سلب نہ کرسکے۔ انہوں نے آگے کہاکہ ہال میں اس طرح کے پروگرام اکثر منعقد ہوتے رہتے ہیں جن میں طالبات بڑھ چڑھ کر حصہ لیتی ہیں۔پروگرام کی نظامت ذکیہ خان نے کی اور شکریہ سینئر ہال فہمینہ شکیل نے کیا۔اس پروگرام کو کامیاب بنانے میں ایمن ظفر، نوریہ رفیع، عنبر تنویر، ہبا علی،حریم فاطمہ وغیرہ نے خصوصی تعاون دیا۔یومِ خواتین کے موقع پر زویاشاہین اور آفرین ناز نے خواتین کے تعلق سے نظم پیش کی ۔ اس موقع پر ڈاکٹر تبسم چودھری اور ڈاکٹر فرحین بھی موجودتھیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *