اے ایم یو انتظامیہ طالبات کی اعلیٰ درجہ کی تعلیم کیلئے حد درجہ سنجیدہ: پروفیسر طارق منصور

Share Article
amu

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو)کے ویمنس کالج میں ’’ یومِ بانیان‘‘ کی تقریب روائتی جوش و خروش کے ساتھ منعقد کی گئی جس میں اے ایم یو کے وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے مہمانِ خصوصی کی حیثیت سے مختلف میدانوں میں نمایاں کامیابی حاصل کرنے کے لئے طالبات کو انعامات سے سرفراز کیا۔جویریہ راشد خان کو تعلیمی اور نیم تعلیمی سرگرمیوں میں نمایاں کارکردگی کے لئے سال2019کے’’ پدم بھوشن پاپا میاں ایوارڈ‘‘ سے نوازا گیا جبکہ بشریٰ صلاح الدین کو’’ ایم جے حیدر ایوارڈ‘‘ اور ونیتا چودھری کو’’ ڈاکٹر ذاکر حسین ایوارڈ‘‘ سے سرفراز کیا گیا۔اس موقع پروائس چانسلرپروفیسر طارق منصور نے پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ویمنس کالج نے تعلیمِ نسواں کے میدان میں تاریخی کارنامہ انجام دیا ہے اور ہندوستان ہی نہیں بلکہ دنیا بھر میں یہاں کی طالبات اس ادارہ کا پرچم لہرا رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس ادارہ نے کئی ممتاز شخصیات پیدا کی ہیں جن کے کارناموں سے ہندوستانی تاریخ کا ایک زریں باب عبارت ہے۔

پروفیسر طارق منصور نے ابتدائی تعلیمی سطح پر طالبات کے بڑی تعداد میں پڑھائی چھوڑنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے2020میں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی صدی تقریبات کے موقع پر لڑکیوں کی تعلیم کے لئے ایک نئے ادارے کے قیام کی تجویز حکومتِ ہند کو پیش کی ہے جس کی منظوری سے طالبات کو مختلف قسم کے ہنر کی تعلیم و تربیت کی فراہمی آسان ہو جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی انتظامیہ طالبات کی اعلیٰ درجہ کی تعلیم کے لئے سنجیدہ ہے اور اس ضمن میں ویمنس کالج اور دیگر اداروں کو ہر ممکن سہولیات بہم پہنچائی جا رہی ہیں۔پروگرام کی اعزازی مہمان وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور کی اہلیہ اور ممتاز ماہرِ امراضِ اطفال ڈاکٹر حمیدہ طارق نے کہا کہ لڑکیوں کو بھی لڑکوں کے مساوی تسلیم کیا جانا چاہئے کیونکہ وہ بھی زندگی کے ہر شعبہ میں مردوں کے شانہ بشانہ نمایاں کارنامے انجام دے رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگرچہ ہمارا معاشرہ مرد اساس ہے لیکن خواتین ہی اس معاشرہ کی روحِ رواں ہیں۔

مہمانوں کا خیر مقدم کرتے ہوئے ویمنس کالج کی پرنسپل پروفیسر نعیمہ خاتون نے سالانہ رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ بانئ ادارہ شیخ عبداللہ عرف پاپا میاں اور ان کی اہلیہ بیگم وحید جہاں نے ’’ تعلیمِ نسواں‘‘ کے فروغ میں جوقائدانہ کردار ادا کیا اس کے مثبت اثرات تا قیامت جاری رہیں گے۔انہوں نے کالج کے ترقیاتی عمل میں تعاون کے لئے وائس چانسلر کا شکریہ ادا کیا۔انہوں نے مختلف میدانوں میں بہترین کارکردگی کے لئے کامیاب طالبات کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے ان کے روشن مستقبل کی توقع کا اظہار کیا۔اس موقع پر کالج کی سالانہ میگزین کے علاوہ ڈاکٹر زیبا شیریں، پروفیسر نازیہ حسن، ڈاکٹر شگفتہ نیاز، ڈاکٹر ساریکا وارشنے اور ڈاکٹر افسانہ پروین کی کتابوں کا اجراء بھی عمل میں آیا۔پروگرام کے اختتام پر طالبات نے متعدد ادبی و ثقافتی پروگرام پیش کئے۔ نظامت پروفیسر نازیہ حسن اور حمیرہ محمود آفریدی نے کی ۔ حمیرہ محمود آفریدی نے ہی حاضرین کا شکریہ بھی ادا کیا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *