کیا ہے کلاؤڈ کمپیوٹنگ؟

Share Article

 

گر کمپیوٹر اور انٹرنیٹ کی بات کریں، تو ایک تکنیک کا نام بار بار آتا ہے، وہ ہے کلاؤڈ کمپیوٹنگ۔ ویسے موجودہ دور کی بات کی جائے، تو زیادہ تر انٹرنیٹ سروسز کسی نہ کسی شکل میں کلاؤڈ کمپیوٹنگ سے جڑتی جارہی ہیں اور اگر یہی رفتار رہی، تو آنے والے دور میں دنیا تقریباً سبھی کاموں کے لیے کلاؤڈ کمپیوٹنگ پر ہی انحصار کرے گی۔

 

آئیے جانتے ہیں کہ کلاؤڈ کمپیوٹنگ کیا ہے؟ کون سی تکنیک اس میں استعمال میں لائی جاتی ہے، اس کا استعمال کتنا پرانا ہے، اس سے جڑے لوگوں میں کیاکیا غلط فہمیاں ہیں اور اس کے کیا فائدے ہیں ؟
کلاؤڈ کمپیوٹنگ کسے کہتے ہیں؟

 

Image result for What's Cloud Computing?

کلاؤڈ کمپیوٹنگ یعنی ڈاٹا اسٹوریج اسپیس، اگر سیدھے الفاظ میں کہا جائے، تو جس طرح ہم اپنے کمپیوٹر، لیپ ٹاپ،اسمارٹ فون یا ٹیبلٹ پر کوئی فائل یا ڈاکیومنٹ کو سیو کرنے کے لیے اُس ڈیوائس کے اسٹوریج ڈرائیو کا استعمال کرتے ہیں، بالکل اسی طرح ہی کسی بھی دوسرے ڈاٹا کو انٹرنیٹ کے ذریعہ کسی دوسری جگہ موجود کمپیوٹر پر سیو کرنے کے عمل کو کلاؤڈ کمپیوٹنگ کہتے ہیں۔

 

کلاؤڈ کمپیوٹنگ کے نام سے کئی بار لوگوں کو یہ بھی بھرم ہوجاتا ہے کہ اس کا نام رکھنے میں بادلوں کا بھی کوئی ہاتھ ہے۔ حالانکہ اس کا سیدھا تعلق بادلوں سے تو نہیں ہے، لیکن اس تکنیک کے بارے میں اگر گہرائی سے سمجھا جائے، تو یہ کچھ بادلوں سے میل کھاتی ہے۔ اس میں فرق اتنا ہے کہ بادلوں میں پانی ہوتاہے اور ہم جس کلاؤڈ کی بات کررہے ہیں، اس میں ڈیجیٹل ڈاٹا ہوتا ہے۔ ڈاٹا کسی بھی فارمیٹ میں ہوسکتا ہے۔ وہ چاہے ڈاکیومنٹ فائل ہو، آڈیو ہو یا ویڈیو ہو۔ یہ بے حد طاقتور اور تیز پروسیسنگ کرنے والے کمپیوٹروں کے ذریعہ آپریٹ ہوتے ہیں ، جنھیں سرور کہا جاتا ہے۔

 

کلاؤڈ کمپیوٹنگ کوئی نئی چیز نہیں ہے۔ اگر آپ انٹر نیٹ کا استعمال کرتے ہیں، تو اس سے کافی پہلے سے جڑے ہوئے ہیں۔ ہوسکتا ہے کہ آپ نے کلاؤڈ کمپیوٹنگ کے بارے میں خیال نہیں کیا ہوگا۔ آج کے دور میں تقریباً سبھی لوگ ای ۔ میل سروس کا استعمال کرتے ہیں، وہ بھی کلاؤڈ کمپیوٹنگ کا ایک حصہ ہے۔ کیونکہ وہ بھی ای ۔ میل یوزر کے کمپیوٹر پر سیو نہیں رہتا ہے، بلکہ کسی دیگر سرور پر سیو رہتا ہے۔ زیادہ تر لوگ ای۔ میل کو اپنے کمپیوٹر پر ڈاؤن لوڈ نہیں کرتے ہیں۔ انٹر نیٹ پر دیکھ کر اسے وہیں چھوڑ دیتے ہیں، کیونکہ لوگ ہارڈ ڈرائیو کو ای ۔ میل سے نہیں بھرنا چاہتے ہیں۔ یہ ساری چیزیں کسی دوسری کمپنی کے سرور (کلاؤڈ) پر رہتی ہیں۔ وہیں دوسری طرف فیس بک یا دیگر کسی بھی سوشل نیٹ ورکنگ ویب سائٹ پر ہم اپنی پکچر، یوٹیوب پر کوئی ویڈیو یا بلاگ پر کچھ لکھ کر اَپ لوڈ کرتے ہیں، تو ان سبھی چیزوں میں کلاؤڈ کمپیوٹنگ کا ہی استعمال ہے۔

 

Image result for What's Cloud Computing?

آج دنیا بھر میں بہت سی کمپنیاں کلاؤڈ کمپیوٹنگ کا استعمال اپنے کاروبار کو بڑھانے کے لیے کر رہی ہیں۔ سبھی کمپنیاں اپنے اپنے طریقوں سے یوزر کو لبھانے کی کوشش کررہی ہیں جیسے کوئی کمپنی اپنے یوزر کے من پسند گانوں کو اس کی کلاؤڈ سروس پر رکھنے کا موقع دیتی ہے، تو کچھ کمپنیاں یوزر کی پسندیدہ پکچر کو رکھنے کا موقع دیتی ہیں۔ کئی کمپنیاں ڈاٹا کو رکھنے اور اسے شیئر کرنے کا آپشن بھی دے رہی ہیں۔ اس پورے معاملے میں یوزر کے نقطہ نظر سے سب سے اچھی اور دلچسپ بات یہ ہے کہ زیادہ تر کلاؤڈ کمپیوٹنگ سروس مفت میں حاصل ہوسکتی ہے۔

 

 

اس معنی سے دیکھیں، تو کلاؤڈ کمپیوٹنگ کے بغیر سبھی طرح کی کمیونیکیٹنگ ڈیوائسیز صرف کھلوناہیں۔ انٹر نیٹ کی سہولت اور اس میں موجود الگ الگ فیچرس کلاؤڈ کمپیوٹنگ کے ذریعہ ہی کام کرتے ہیں۔ ویب سرچ انجن ہو یا کوئی دوسری دیگر سائٹ، سبھی کلاؤڈ کمپیوٹنگ کے ذریعہ ہی یوزر تک پہنچتی ہیں۔ گوگل سرچ ہو، یاہو میل ہو یا پھر فوٹو شیئر کرنے والی ویب سائٹ، کلاؤڈ کمپیوٹنگ کے بغیر اس کا کوئی وجود ہی نہیں ہے۔
کلاؤڈ کمپیوٹنگ کا استعمال کیسے کریں؟

 

 

کلاؤڈ کمپیوٹنگ کو استعمال کرنے کے لیے سب سے پہلے آپ جس کلاؤڈ سروس کو منتخب کرنا چاہتے ہیں، اس کی ویب سائٹ پر اپنا ایک اکاؤنٹ بنائیں ۔ اس کے کچھ دیر بعد آپ اس کی اس سروس کا فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ یہ استعمال کرنے میں بہت آسان ہے۔
ویم ویئر (Vmware) سن مائیکروسسٹم (Sun Microsystem)، ریکسپیس یو ایس (Rackspace US)، آئی بی ایم (IBM)، امیزن (Amazon)، گوگل، بی ایم سی (BMC), ، مائیکرو سافٹ (Microsoft) اور یاہو (Yahoo) یہ اہم کلاؤڈ کمپیوٹنگ سروس کرنے والی کمپنیاں ہیں۔ سبھی کمپنیاں اپنے یوزر کو شروع کے کچھ جی بی اسپیس فری میں دیتی ہیں۔ یہ ذاتی استعمال کے لیے کافی ہوتا ہے، لیکن اگر آپ کو اس کے بزنس یا خود کے استعمال کے لیے فری اسپیس سے زیادہ اسپیس چاہیے، تو آپ متعلقہ کمپنی کوپیمنٹ کرکے اور زیادہ اسپیس خرید کر اس سروس کا فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔

 

 

کلاؤڈ کمپیوٹنگ کو کئی حصوں میں بانٹا گیا ہے
پبلک کلاؤڈ ، پرائیویٹ کلاؤڈ اور ہائی برڈ کلاؤڈ کمپیوٹنگ
پبلک کلاؤڈنام کے اعتبار سے عام لوگوں کے لیے آسانی سے فراہم ہوتی ہے۔ اس انفراسٹرکچر میں سرور سروس فراہم کرنے والے کے کنٹرول میں ہوتا ہے۔ اس میں یوزر نہ تو سرور کمپیوٹر کو دیکھ سکتاہے اور نہ ہی سرور پر اس کا کنٹرول ہوتا ہے۔ یوزر کو یہ بھی جانکاری نہیں ہوتی ہے کہ اس کا ڈاٹا کہاں اور کس سرور پر رکھا گیا ہے۔ عموماً کلاؤڈ سروس فراہم کرنے والی کمپنی جیسے مائیکروسافٹ، گوگل، امیزن اور سن مائیکروسسٹم اسی انفراسٹرکچر کا استعمال کرتی ہیں۔ اگر آپ بزنس کے لیے اس انفراسٹرکچر کا استعمال کرتے ہیں، تو یہ آپ کے لیے اقتصادی طور پر زیادہ کفایتی ہوتا ہے،کیونکہ اس میں موجود سبھی یوزر میں خرچ کو برابر حصوں میں بانٹ دیا جاتا ہے، جس سے کم خرچ میںآپ کا کام ہوجاتا ہے۔سب سے بڑی بات یہ ہوتی ہے کہ اس میں آپ کو سرور کی دیکھ بھال اور رکھ رکھاؤ سے چھٹکارہ مل جاتا ہے۔

 

 

کب پبلک کلاؤڈ کمپیوٹنگ کو منتخب کریں
جب آپ کی آرگنائزیشن میں کسی ایپلی کیشن پر بہت سارے لوگ ایک ساتھ کام کررہے ہوں جیسے ای۔میل کا استعمال ۔
سرور پر کوئی ایپلی کیشن رکھی ہو اور آپ کے ادارے کے سبھی لوگ اس سافٹ ویئر کا استعمال کررہے ہیں جیسے ٹیلی۔
اگر کئی سافٹ ویئر کی پروگرامنگ او ر ٹیسٹنگ کئی جگہ سے کئی لوگوں کے ذریعہ کرنی ہو۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *