مولانا آزاد اردو یونیورسٹی کے چانسلر فیروز بخت کو استقبالیہ

Share Article
Firoz-bakht
نئی دہلی: دہلی کی ادبی اور ثقافتی تنظیم’’میزان‘‘ کے زیر اہتمام دہلی کی معروف شخصیت فروز بخت کو مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی، حیدر آباد کے چانسلر منتخب کئے جانے پر غالب اکیڈمی، بستی نظام الدین میں ایک استقبالیہ دیا گیا ۔ اس کی صدارت جامعہ ملیہ اسلامیہ ،شعبۂ اردو کے سابق صدر پروفیسر قاضی عبید الرحمان ہاشمی نے کی جبکہ نظامت کے فرائض وسیم راشد نے انجام دئیے۔ مہمان خصوصی کے طور پر پٹنہ ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس(ریٹائرڈ) اقبال احمد انصاری اور انٹر فیتھ ہارمنی فاؤنڈیشن کے صدرخواجہ افتخار احمد شریک ہوئے۔ میزان کے سکریٹری جنرل اور معروف شاعر ڈاکٹر ماجدؔ دیوبندی نے استقبالیہ تقریر میں میں کہا کہ فروز بخت نے دہلی میں غالب کی حویلی اور مولانا آزاد کے مزار کو وا کروانے اور ان کو پامالی سے بچانے لیے بہت کچھ کیا ہے ۔ساتھ ہی ملی مسائل پر وہ ہمہ وقت سرگرم رہتے ہیں۔
جسٹس اقبال انصاری نے فروز بخت کو مبارک دینے کے ساتھ ساتھ ’’میزان‘‘ کا شکریہ ادا کیا اور امید ظاہر کی کہ ان کی اس تقرری سے اردو اور مسلمانوں میں تعلیم کے رجحان کو فروغ ملے گا۔ خواجہ افتخار احمد نے فروز بخت اور ان کے خاندان کے حوالے سے تفصیلی اظہار خیال کیا او ر کہا کہ ان کا تقرر ہونا ان کو اعزاز کے ساتھ ساتھ ان کا حق ملنے کے طور پر دیکھا جانا چاہئے۔ صدر جلسہ قاضی عبید الرحمان ہاشمی نے کہا کہ فروز بخت کے چانسلر کے تقرر سے مولانا آزاد اردو یونیورسٹی میں بہتری کی امید کی جانی چاہئے۔ صاحب اعزاز فروز بخت نے ’’میزان‘‘ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر ماجد ؔ دیوبندی جو خود ایک عالمی شخصیت کے مالک ہیں، ان کی طرف سے اعزاز دینا میرے لیے فخر کی بات ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنی جانب سے پوری کوشش کریں گے کہ اردو کے ساتھ ساتھ مسلمانوں میں تعلیم کے رجحان کو عام کیا جائے اور مولانا آزاد اردو یونیورسٹی کے دائرہ کار کو اور زیادہ بڑھایا جائے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *