کئی ریاستوں میں طوفان کا خطرہ،الرٹ جاری

Share Article
toofan
مئی کے مہینے میں شروعات کے پہلے دن جہاں گرمی نے لوگوں کوبے حال کردیا وہیں دوسرے دن اچانک آئی آندھی اورطوفان نے سیکڑوں لوگوں کی جان لے لی۔وہیں اب محکمہ موسمیات نے الرٹ جاری کیا ہے کہ اگلے 48گھنٹوں کے دوران اترپردیش اور راجستھان کے کچھ حصوں میں دھول بھری آندھی وطوفان آنے کی امید ہے۔ الرٹ دیا ہے کہ 5 مئی کو پھر سے طوفان کے ساتھ بھاری بارش ہو سکتی ہے۔
محکمہ موسمیات کے ایک افسرنے بتایاکہ ان کے محکمہ نے پچھلے دودنوں میں آندھی -طوفان آنے کے تعلق سے الرٹ جاری کیاتھا اگلے 48گھنٹوں کے دوران تیزہواؤں کے چلنے سے دھول بھری آندھی آنے کی امیدہے۔اس سے اترپردیش اورراجستھان کے سرحدی علاقے خاص طورپر کرولی، دھول پور ضلع متاثرہوسکتے ہیں ۔وہیں بہار ، اتراکھنڈ ، دہلی اورہریانہ سے متصل علاقوں میں موسم خراب رہنے کاخدشہ ظاہرکیاہے۔

 

یہ بھی پڑھیں  میٹرومیں ایک نوجوان کی شرمناک حرکت

 

خبروں کے مطابق، یو پی میں بدھ کو آئے آندھی۔طوفان اور راجستھان میں مرنے والوں کی تعداد 115 تک پہنچ گئی ہے۔راجستھان میں آئے طوفان سے بجلی پر زبردست اثر پڑا ہے۔الور ،بھرتپور ،کرولی اور دھولپور میں قریب 10ہزار بجلی کے پول کو آندھی وطوفان سے نقصان پہنچا ہے۔بھرتپور شہر میں بجلی غل ہے۔صرف الور میں 5 ہزار بجلی کے کھمبے گر گئے ہیں۔یوپی میں اب تک آندھی۔طوفان سے 73 لوگوں کی موت ہو گئی ہے اور 91 لوگ زخمی ہوئے ہیں۔
محکمہ موسمیات کے ترجمان نے بتایا کہ کم از کم درجہ حرارت کل کے 19.8ڈگری کے مقابلے بڑھ کر 22.6ڈگری ہوگیا ہے۔ دن کا زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 35ڈگری رہنے اور گرج کے ساتھ تیز چھینٹے پڑنے کی امید ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق سنیچر کو بھی اسی طرح کا موسم رہنے کااندازہ ہے اور کم از کم درجہ حرارت 23ڈگری رہ سکتا ہے۔ کل کا زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 35.2ڈگری درج کیا گیا تھا۔وہیں دہلی میں آج صبح آسمان میں جزوی طورپر بادل چھائے رہے اور کم از کم درجہ حرارت 22.6ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیاجو اس سیز ن کے لحاظ سے دو ڈگری کم ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *