چھوٹے کپڑے پہن کر پارلیمنٹ پہنچی خاتون لیڈر کو ملی ریپ کی دھمکی

Share Article
deputadapaulinha

براجيل کی ایک خاتون رکن پارلیمنٹ کو ریپ کی دھمکی دیے جانے کا سنسی خیز معاملہ سامنے آیا ہے۔ جہاں ایک لو کٹ ڈریس پہن کر پارلیمنٹ پہنچنے پر خاتون لیڈر کو نہ صرف سوشل میڈیا پر تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔ بلکہ سوشل میڈیا یوزرس نے ان کا ریپ کرنے کی دھمکی تک دی ہے۔ اگرچہ خاتونممبر پارلیمنٹ نے ان ٹرولرس کو منہ توڑ جواب دیا ہے۔

 

Image result for deputadapaulinha

دراصل یہ پورا معاملہ براجیل کی لیڈراینا پاؤلا دا سلوا سے منسلک ہے۔ رپورٹ کے مطابق اینا پاؤلا، براجیل کی پارلیمنٹ میں منعقد ایک پروگرام میں ایک لو کٹ ڈریسپہن کر پہنچی تھیں۔ وہیں اینا پاؤلا کی تصاویر سوشل مڈيا پر آنے کے بعد جہاں کچھ یوزرس نے ان کی ڈریس کی تعریف کی۔تو وہیں کچھ لوگوں نے چھوٹے کپڑے پہن کر پارلیمنٹ آنے پر نہ صرف ان کے ڈریس پر سوال سوال اٹھائے بلکہ لباس کی برانڈنگ کرنے کی بات بھی کہیں۔ لیکن حد تو تب ہو گئی جب کچھ یوزرس نے خواتین رہنما کی تصویر پر ناقص تبصرہ کرتے ہوئے ریپ کرنے کی دھمکی تک دے دی۔ جس کا اینا پاؤلا نے منہ توڑ جواب دیا۔انہوں نے کہا کہ میں جیسی ہوں، ویسی ہی رہوں گی۔ میں اکثر ایسی ہی ٹائیٹ اور لو کٹ ڈریس پہنتی ہوں اور وہی پہننا جاری رکھوں گی جو میں چاہتی ہوں۔

اینا پاؤلا نے اسٹاگرام پر رائے دیتے ہوئے کہا کہ ان کے کپڑوں سے ان کے کام کا کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے ریپ کی دھمکی دینے والوں پر مقدمہ درج کرانے کی بات بھی کہی۔

 

غور طلب ہے کہ 43 سالہ اینا پاؤلا دا سلوا جنوری 2018 میں براجیل کے جنوب مشرقی ساحل پر واقع ساٹا قطرینہ سیٹ سے ایم پی چنی گئی ہیں۔ وہیں اینا بمبنهاس شہر کے میئر کے طور پر کام کر چکی ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *