پاٹیدارلیڈرہاردک پٹیل کودوسال کی سزا، 50ہزارروپے کاجرمانہ، جانئے کیوں

Share Article
hardik-patel
گجرات میں سال 2015میں پاٹیدارآندولن کے دوران تشددکے معاملے میں پاٹیدارلیڈرہاردک پٹیل کووہاں کی مقامی عدالت نے قصوروارقراردیاہے۔اس کے ساتھ پاٹیدارلیڈرکودوسال کی سزاسنائی گئی ہے۔اس کے علاوہ ان پر50ہزارروپے کا جرمانہ بھی لگایاگیاہے۔گجرات میں پٹیل ریزرویشن آندولن کے لیڈر ہاردک پٹیل سمیت تین لوگوں کو مہسانا دنگامعاملے میں قصوروارقراردیا گیاہے۔ ان کے علاوہ جن دولوگوں کوقصوروارقراردیاگیاہے ،ان میں سردارپٹیل گروپ کے صدرلال جی پٹیل کا بھی نام شامل ہے۔ اس معاملے میں ہاردک پٹیل اورلال جی پٹیل اور2-2سال کی سزادی گئی ہے۔ وہیں اس معاملے میں دیگر14لوگوں کوبری کردیاہے۔سزاملنے کے بعد ہاردک پٹیل نے ایک ٹویٹ کیاہے۔ جس میں انہو ں نے ’’انقلاب زندہ آباد‘‘ لکھاہے۔ہاردک پٹیل نے ٹویٹ کرکے کہاہے کہ ’’کسی بھی مشکل کو اس کے بنائے گئے لیول پرحل نہیں کیا جاسکتا، اس مصیبت کواس لیول سے اوپر اٹھنے پرہی حل کیا جاسکتاہے۔انقلاب زندہ آباد‘‘۔
واضح رہے کہ گذشتہ سال ریزرویشن آندولن کے دوران مقامی بی جے پی رکن اسمبلی رشی کیش پٹیل کے دفتر میں توڑپھوڑ کے الزام میں ہاردک پٹیل اورلال جی پٹیل سمیت دیگرلوگوں کے خلاف معاملہ درج ہواتھا۔مہسان اورمانساکے بعد بس نگر میں ریزرویشن آندولن کی تیسری ریلی کے دوران یہ حملہ ہواتھا۔یہ ریزرویشن آندولن کے دوران تشددکا پہلاواقعہ تھا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *