جنوبی مشرقی دہلی کے تغلق آباد علاقے میں تشدد غیر مناسب، بی ایس پی کا لینا دینا نہیں: مایاوتی

Share Article

بہوجن سماج پارٹی کی سربراہ مایاوتی نے جنوبی مشرقی دہلی کے تغلق آباد اور ارد گرد کے علاقوں میں بدھ دیر شام ہوئے تشدد کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس میں ان کے پارٹی کے لوگ کسی بھی طرح شامل نہیں تھے اور پارٹی کا اس سے کوئی سروکار نہیں ہے۔

Image result for Violence in Tughlaqabad area of South East Delhi not appropriate, BSP should not be taken: Mayawati
مایاوتی نے جمعرات کو ٹویٹ کیا کہ بی ایس پی کے لوگوں کے ذریعہ قانون کو اپنے ہاتھ میں نہیں لینے کی جو روایت ہے وہ مکمل طور پر آج بھی برقرار ہے جبکہ دوسری پارٹیوں اور تنظیموں کے لئے یہ عام بات ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنے سنتوں، گرووں اور عظیم لوگوں کے اعزاز میں بے قصور لوگو ںکو کسی بھی قسم کی تکلیف اور نقصان نہیں پہنچانی ہے۔ اسی لیے کل دہلی کے خاص طور پر تغلق آباد علاقے میں جو تشدد وغیرہ کے واقعات پیش آئے، وہ غیر مناسب ہیں اور اس سے بی ایس پی کا کچھ بھی لینا دینا نہیں ہے۔

Image result for Violence in Tughlaqabad area of South East Delhi not appropriate, BSP should not be taken: Mayawati
مایاوتی نے کہا کہ بی ایس پی آئین و قانون کی ہمیشہ احترام کرتی ہے اور اس پارٹی کا کام قانون کے دائرے میں ہی رہ کر ہی ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی ایس پی کے لوگوں کو کسی بھی پر تشدد واقعہ کے گھٹنے کے بعد اگر حکومت کہیں پر دفعہ 144 کے تحت پابندی لگاتی ہے تو اس کی خلاف ورزی نہیں کرنی ہے اور دیگر جماعتوں کے رہنماؤں کی طرح جائے وقوعہ پر زبردستی نہیں جانا ہے تاکہ حکومت کو بے لگام اورکارروائی کرنے کا موقع نہیں مل سکے۔

Image result for Violence in Tughlaqabad area of South East Delhi not appropriate, BSP should not be taken: Mayawati
غور طلب ہے کہ جنوبی مشرقی دہلی کے تغلق آباد اور ارد گرد کے علاقوں میں بدھ کو روی داس مندر کو توڑنے کو لے کر تشدد بھڑکا۔ اس دوران فسادیوں نے کئی گاڑیوں میں توڑپھوڑ اور آتش زنی کی۔ حالات کو قابو کرنے کے لئے پولیس کو لاٹھی چارج، آنسو گیس کے گولے چھوڑنے کے ساتھ ہوائی فائرنگ کرنی پڑی۔ اس تشدد میں متعدد پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے ہیں۔ معاملے کو لے کر بھیم آرمی کے سربراہ چندر شیکھر سمیت بہت سے لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *