جسدخاکی پر سیاست کر رہی ہے بی جے پی؟ تو دیکھئے ساکشی مہاراج نے شہید جوان کی لاش یاترا میں کیا کیا

Share Article
sakshi-maharaj
اناؤ:جموں وکشمیرکے پلوامہ میں ہودہشت گردانہ حملے میں 40سے زیادہ جوان شہیدہوئے ،جس پرملک بھرمیں عوام کے اندرغصہ ہے، لیکن کیابی جے پی کے رکن پارلیمنٹ اس پرسیاست کرنے لگے ہوئے ہیں؟ یاپھروہ شہیدجوان کی چتا(جسدخاکی)پر انتخابی تشہیرکررہے ہیں؟ اس طرح کا سوال اٹھ رہاہے۔آپ کوبتادیں کہ ساکشی مہاراج بی جے پی سے اترپردیش کے اناؤسے رکن پارلیمنٹ ہیں،جوشہیدجوان اجیت کمارآزادکی لاش یاترا میں دکھائی دئیے۔ساکشی مہاراج باقاعدہ ہاتھ کوہلاکرلوگوں کوسلام کرتے نظرآرہے تھے، جس کے بعد ساکشی مہاراج کے اس عمل پرلوگ سوشل میڈیاپرجم کرمخالفت کررہے ہیں۔
سوشل میڈیاپرلو گ ساکشی مہاراج کی تنقیدکررہے ہیں۔ساکشی مہاراج پرشہیدجوان کی چتاپرانتخابی تشہیرکرنے کا الزام لگایاجارہاہے۔بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ پرلوگ یہ بھی الزام لگارہے ہیں کہ جہاں ایک طرف ملک بھرمیں غصہ کاماحول ہے،وہیں دوسری طرف بی جے پی رکن پارلیمنٹ اس حساس معاملے کوبھی کوانتخابی تشہیریاسیاسی ایشوبنانے میں لگے ہوئے ہیں۔کل ملاکر پلوامہ کافدائین حملہ یہ ملک پرحملہ قراردیاگیاہے اوراس حملے کے بعد سے ہی سبھی لوگ جوانوں کی شہادت پراپنے اپنے طورپرافسوس کا اظہارکررہے ہیں۔


اس کے علاوہ سبھی سیاسی پارٹیاں مل کراس میں ایک ساتھ دکھ رہے ہیں۔لگاتاریہ بھی کہاجارہاہے کہ اس معاملے پرسیاست نہ کی جائے،وزیراعظم نریندرمودی کا ساتھ دیاجائے۔ایسے معاملے پراگراس طرح کاواقعہ سامنے آتاہے ،توواقعی یہ قابل مذمت ہے اوربی جے پی رکن پارلیمنٹ ساکشی مہاراج کو بھی یہ سوچنا ہوگاکہ وہ اس طرح کا کام کرنے سے بچیں۔بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ پرالزام ہے کہ انہوں نے جوانوں کی شہادت کی توہین کی ہے۔ ویسے بھی تنازعات میں رہنے والے ساکشی مہاراج کے ساتھ یہ ایک اورتنازع شامل ہوتادکھ رہاہے کیونکہ جوانوں کی چتاپرسیاست کرنا ٹھیک نہیں ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *