برطانیہ کی لیبر پارٹی کا کشمیر میں مداخلت کا مطالبہ

Share Article

برطانیہ کی اہم اپوزیشن لیبر پارٹی نے بدھ کو کشمیر پر ایک ہنگامی قرارداد منظور کر کے وہاں بین الاقوامی مداخلت کا مطالبہ کیا۔ اگرچہ بھارت نے اس قدم کی مذمت کی ہے۔ یہ معلومات جمعرات کو میڈیا رپورٹ سے ملی۔

لیبر پارٹی کی سالانہ کانفرنس میں کشمیر پر اس ارادے کا قرارداد منظور کیا گیا۔ تجویز پاس کرتے ہوئے پارٹی کے لیڈر جیریمی کوربن سے بین الاقوامی مبصرین کو علاقے میں جانے اور وہاں لوگوں کے خود فیصلے کے حق کا مطالبہ کرنے کے لئے کہا گیا۔

بھارت نے کشمیر مسئلے پر بین الاقوامی مداخلت کا مطالبہ کرنے والی برطانیہ کی لیبر پارٹی کی تجویز کی سخت تنقید کی ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے لیبر پارٹی کے اقدامات کو ووٹ بینک مفادات والا بتایا اور کہا کہ اس معاملے پر لیبر پارٹی یا اس نمائندوں سے بات چیت کرنے کا کوئی سوال نہیں ہے۔

واضح ہو کہ اپوزیشن نے کشمیر پر یہ تجویز برطانوی حکومت کے سرکاری موقف کے برعکس پاس کیا ہے۔ برطانوی حکومت کا یہ سرکاری موقف رہا ہے کہ کشمیر بھارت اور پاکستان کے درمیان دو طرفہ مسئلہ ہے۔ بھارت یہ صاف کر چکا ہے کہ کشمیر اس کا اور پاکستان کے درمیان دو طرفہ معاملہ ہے۔ اس میں کسی کی مداخلت کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔

وہیں پاکستان حال میں بھارت کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کے بعد سے بوجھلایا ہوا ہے۔ وہ بہت سے ممالک کے سامنے کشمیر کا مسئلہ اٹھا چکا ہے، لیکن اس ہر جگہ مایوسی ہی ہاتھ لگی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *