یوجی سی ایچ آرڈی سنٹر میں شعبہ اردو کے ریسرچ اسکالروں کے لئے 21روزہ تربیتی پروگرام کا آغاز

Share Article

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے یوجی سی ایچ آرڈی سنٹر میں شعبہ اردو کے ریسرچ اسکالروں کے لئے منعقدہ 21 روزہ تربیتی پروگرام کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر ایمریٹس فرحت اللہ خاں (شعبہ انگریزی) نے کہاکہ تربیتی پروگراموں اور تبادلہء خیال سے فکر کا دائرہ وسیع ہوتا ہے اور نئے پہلوؤں اور زاویوں پر غور و فکر کی تحریک ملتی ہے۔

انھوں نے ریسرچ اسکالروں سے کہاکہ بہت جلدآپ تدریس سے وابستہ ہوں گے ایسی صورت میں اس بات کی ضرورت تھی کہ ملک کے اہم اور اچھے ریسورس پرسنس کے ذریعہ بتایا جائے کہ آپ کا لائحہ عمل کیا ہو۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ اکیس دنوں میں جن موضوعات پر گفتگو ہوگی وہ بہت اہم ہیں،ان سے آپ کا ذہن کھلے گا۔ پروفیسر فرحت اللہ خاں نے سنٹر کے ڈائریکٹر پروفیسر اے آر قدوائی اور ورکشاپ کے کوآرڈنیٹر ڈاکٹر آفتاب عالم نجمی کو مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ وقت کی ضرورت کے مد نظر اس طرح کے ورکشاپ کا اہتمام کیا ہے جس سے یقینا طلبا کو بہت فائدہ ہوگا۔

صدر شعبہء اردو پروفیسر ظفر احمد صدیقی نے اردو زبان کے امتیازات پر گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ پراکرت سے نکلی زبانوں میں اردو واحد زبان ہے جس کا ذخیرہ الفاظ او ر مفردات و اصطلاحات سب سے زیادہ ثروت مند ہے۔ انھوں نے متعدد مثالیں پیش کرتے ہوئے کہا کہ اردو زبان میں جہاں علاقائی لفظیات آج بھی برقرار ہیں وہیں اس زبان نے فارسی اور عربی سے اپنا لسانی رشتہ جوڑ کر اپنے ذخیرہ کو وسعت دی ہے اور ان دونوں زبانوں کی لفظیات و اصطلاحات کے ساتھ ہی قواعد میں بھی ان سے استفادہ کیا جس کی وجہ سے اردو میں دوسری زبانوں کے مقابلے سب سے زیادہ تنوع پیدا ہوا۔ پروفیسر صدیقی نے طلبا سے اپیل کی کہ زبان کے فروغ اور اس کی وسعت کے لئے ضروری ہے کہ رضاکارانہ طور پر اس زبان کی تعلیم دیں اور اپنے بچوں اور لواحقین کو اردو سکھائیں۔

ڈاکٹر فائزہ عباسی نے ورکشاپ کے اغراض و مقاصد بیان کرتے ہوئے بتایا کہ یوجی سی نے تین برس سے یہ ورکشاپ بند کررکھی تھی لیکن اب اس کی اجازت دی ہے جس سے آپ کو استفادے کا موقع ملا ہے جو نہایت خوشی کی بات ہے۔ انہوں نے ایچ آرڈی سنٹر کے مقاصد بیان کرتے ہوئے کہا کہ اس کا مقصد اچھے اسکالر اور اساتذہ تیار کرنا ہے،ہماری کوشش رہتی ہے کہ اچھے ریسورس پرسن کا انتخاب کیا جائے اور ان کے ذریعہ ریسرچ اسکالر اور اساتذہ کی تربیت و رہنمائی کی جائے۔ اس ورکشاپ کے لئے بھی علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے اساتذہ کے علاوہ جواہر لعل نہرو یونیورسٹی اور جامیہ ملیہ اسلامیہ سے ماہر اساتذہ اور ریسورس پرسن کو مدعو کیا گیا ہے۔

ورکشاپ کے کوآرڈنیٹرڈاکٹر آفتاب عالم نجمی نے اکیس روزہ ورکشاپ کی غرض و غایت پر روشنی ڈالتے ہوئے کہاکہ ہر طرح کے موضوعات کو اس میں شامل کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ طلبا کو صرف سامع بن کر نہیں رہنا ہے بلکہ عملی شرکت بھی لازمی ہے جس کے لئے ضروری ہے کہ موضوع سے متعلق ماقبل شام کو مطالعہ ضرور کرلیا جائے تاکہ سوالات بھی ذہن میں آسکیں۔اکیس روزہ ورکشاپ میں شعبہء اردو کے پچاس سے زائد ریسرچ اسکالر شرکت کررہے ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *