نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کی تصویر دنیا کی بلند ترین عمارت برج خلیفہ پر آویزاں،دیاامن کا پیغام

Share Article

burj-al-khalifa

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں گزشتہ 15 مارچ کو نماز جمعہ کے دوران دہشت گردانہ حملوں میں 50 افراد شہید اور درجنوں زخمی ہو گئے تھے۔نیوزی لینڈ کی تاریخ کا یہ سنگین ترین واقعہ تھا، جس پرنیوزی لینڈ حکومت اور عوام کی جانب سے شدید افسوس کا اظہار کیا گیا۔ وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن نے خود جاکر متاثرین کی داد رسی کی اور ہر ممکن حکومتی تعاون کا یقین دلایا، اس دوران وہ خود بھی آبدیدہ نظر آئیں، انہوں نے ملک میں اسلحہ سے متعلق قوانین میں ترمیم کا وعدہ کیا اور چند روز بعد ہی اسے پورا بھی کردیا۔

نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن کو خراج تحسین پیش کرنے کے لئے دبئی میں جمعہ کے روز دنیا کی بلند ترین عمارت برج خلیفہ پران کی تصویر آویزاں کی گئی۔کرائسٹ چرچ واقعے کے بعد نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کے شاندار کردار پر ہر طرف سے ان کیلئے تعریف کا ہی اظہار کیا جارہا ہے، دبئی حکومت نے دنیا کی بلند ترین عمارت برج خلیفہ پر جیسنڈا آرڈرن کی تصویر آویزاں کرکے انہیں خراج تحسین پیش کیا۔

دبئی شیخ محمد بن راشد المکتوم کی جانب سے نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جسینڈا آرڈرن کیلئے خصوصی پیغام جاری کیا گیا ہے۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک پر جاری کیے گئے پیغام میں حاکم دبئی شیخ محمد بن راشد نے ٹویٹرپر ایک تصویر پوسٹ کی جس میں نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جسینڈا آرڈرن کی تصویر دبئی کے برج خلیفہ پر آویزاں ہے۔اس تصویر کے ساتھ شیخ محمد بن راشد المکتوم نے اپنا پیغام دیتے ہوئے نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کا خصوصی شکریہ ادا کیا۔شیخ محمد راشد کا کہنا ہے کہ سانحہ کرائسٹ چرچ دنیا بھر کے مسلمانوں کیلئے بے حد تکلیف دہ تھا، تاہم اس موقع پر جسینڈا آرڈرن کی ہمدری اور طرز عمل نے ڈیڑھ ارب مسلمانوں کے دل جیت لیے۔

جیسینڈا آرڈرن نے گزشتہ روز یعنی 22 مارچ کو نماز جمعہ کے بعد شہداء کے جنازے میں شریک ہو کر پوری دنیا کی توجہ اپنی جانب مبذول کرا لی تھی۔ نیوزی لینڈ میں جمعہ کی اذان براہ راست نشر کی گئی۔ بعد ازاں کرائسٹ چرچ مساجد کے 50 شہداء کی یاد میں دو منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی۔اس سے قبل حملے کے بعد نیوزی لینڈ پارلیمنٹ سیشن کا آغازبھی تلاوت کلام پاک سے گیاتھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *