پاکستانی جیل میں بند کلبھوشن جادھو پر آج ICJ میں سماعت، اہم فیصلے کی توقع

Share Article

kulbhushan-jadhav

نئی دہلی: پاکستان میں فساد بھڑکانے کے الزام میں پاکستانی جیل میں بند ہندوستانی شہری کلبھوشن جادھو کو لے کر بھارت اور پاکستان آج ایک بار پھر بین الاقوامی عدالت میں آمنے سامنے ہوں گے۔ بین الاقوامی عدالت دونوں ملکوں کی دلیلوں کی سماعت کرے گی۔ معاملے پر آج سے 21 فروری کے درمیان ہونے والی سماعت میں دونوں ممالک کو اپنا موقف رکھنے اور دوسری طرف سے رکھی گئی دلیلوں کا جواب دینے کا موقع ملے گا۔
پہلے ہندوستان رکھے گا اپنا موقف
ICJ میں سماعت کے دوران اس معاملیمیں سب سے پہلے بھارت کو اپنا موقف رکھنے کا موقع ملے گا، جسے عدالت نے آج انڈین وقت کے مطابق دوپہر 2:30 بجے سے 5:30 بجے تک کا وقت دیا ہے۔ وہیں پاکستان کو دوسرے دن 19 فروری کو اتنا ہی وقت اپنی بات رکھنے کے لئے مل جائے گا۔ پاکستان کے بعد بھارت کو ایک بار پھر 20 فروری کو، بھارتی وقت کے مطابق شام 9 بجے سے 10:30 بجے تک جواب دینے کا موقع ملے گا۔
معاملے کی سماعت کے لیے UNTV پر دیکھا جا سکتا ہے
ICJ میں سماعت کے دوران اس معاملے کی مکمل سماعت کیمروں کے آگے ہو گی، جسے یو این ٹی وی پر دیکھا جا سکتا ہے، حالانکہ اس سماعت کے بعد معاملے پر آئی سی جے کا فیصلہ آنے میں کچھ وقت لگ سکتا ہے۔ اس سے پہلے 15 مئی کو ہوئی سماعت میں انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس کی 10 رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی تھی۔ بنچ نے 18 مئی 2017 کو اتفاق رائے سے سنائے فیصلے میں پاکستان کو معاملے میں عدالتی فیصلے آنے تک جادھو کو سزا دینے سے روک دیا تھا۔

 

 

ہندوستان کی طرف سے مشہور وکیل ہریش سالوے کریں گے پیروی
بھارت کی طرف سے مشہور وکیل ہریش سالوے پیروی کریں گے ان کی مدد کے لئے وزارت خارجہ میں پاکستانی امور کے انچارج جوائنٹ سکریٹری دیپک متل، ایڈیشنل سیکرٹری قانون و معاہدے ڈاکٹر وی ڈی شرما اور ہالینڈ میں بھارت کے سفیر وینو راجامنی موجود ہوں گے۔ پاکستان کا موقف ان کے ایجنٹ خاور قریشی رکھیں گے۔ وہیں پاکستانی سرکاری وفد کی قیادت ان کے اٹارنی جنرل انور منصور کریں گے۔ ساتھ ہی پاکستانی وزارت خارجہ میں جنوبی ایشیا کے معاملات کے ڈائریکٹر جنرل اور ترجمان ڈاکٹر فیصل محمود بھی موجود ہوں گے۔ مجموعی طور پر ICJ میں چل رہے مقدمے سے انصاف کی امید بندھی ہے، پاکستان نے تو یکطرفہ فیصلہ سونا ہی دیا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *