رشتے ہوئے شرمسار!نالغ لڑکی سے چچا اور بھائیوں نے ہی کی اجتماعی عصمت دری

Share Article
raped-and-murder

ساگر:مدھیہ پردیش کے ساگر ضلع میں ایک دل دہلا دینے والا واقعہ سامنے آیا ہے۔ اس واقعہ کے بعد لوگوں کا اپنے خون کے رشتوں پر سے بھروسہ ٹوٹ جائے گا۔ نابالغ لڑکی سے چچا اور بھائیوں نے ہی اجتماعی عصمت دری کرنے کے بعد ہسیا سے سر کاٹ ڈالا۔

14 مارچ کو ایک کھیت سے نابالغبچی کی سر کٹی لاش برآمد ہوئی تھی، جس کے بعد پولیس نے تفتیش شروع کی تو پہلے پولیس اسے پڑوسی سے ہوئے زمینی تنازع کے سبب رنجش کے طور پر قتل کا مان رہی تھی، لیکن جیسے جیسے تفتیش آگے بڑھی انتہائی گھناؤنی اور حیرت انگیزمعلومات سامنے آئیں۔

انکشاف ہوا لڑکی کے قاتل تین بھائی اور چچا ہیں، جنہوں نے پہلے اسے ہوس کا شکار بنایا اور جب راز کھلنے کا اندیشہ ہوا توہسیا سے اس کا سر قلم کر الگ کر دیا۔ لاش کے دونوں حصوں کو ملزمان نے گھر کی ایک خاتون کی مدد سے گاؤں سے دور ایک کھیت میں الگ الگ پھینک کر گھر آ گئے تھے۔ اس کے بعد خود ہی پولیس کو گمراہ کرنے کے لئے سارہ الزام پڑوسی پر ڈال دیا تھا، لیکن جب پولیس نے شارٹ پوسٹ مارٹم رپورٹ اور ثبوتوں کی کڑیاں جوڑی تو حقیقت سامنے آگئی۔

پولیس کو گمراہ کرنے کیلئے گڑھی تھی کہانی

ایس پی امت سانگھی کے مطابق نے بتایا کہ، بنڈا تھانہ علاقہ سے 13 مارچ کو چھٹی جماعت کی طالبہ کی گمشدگی اس کے والدین نے 14 مارچ کو صبح تھانے میں درج کرائی تھی۔ اس کے کچھ گھنٹے بعد شام قریب7 بجے گاؤں کے باہر ایک کھیتی میں سر کٹی لاش ملی جس کی شناخت رشتہ داروں کی طرف سے لاپتہ لڑکی کے طور پر کئے جانے کے بعد پولیس نے تفتیش شروع کی تھی۔ پولیس کو گمراہ کرنے مقتولہ کے چچا۔چاچی اور اس کے بھائیوں نے کوٹیر کی زمین کو لے کر پڑوسی سے ہوئے تنازع کے سبب چھوٹے پٹیل پر قتل کا اندیشہ ظاہر کیا تھا، جس کی وجہ سے پولیس نے پہلے اسی سمت میں تحقیقات شروع کی کیونکہ واردات کے بعد چھوٹے پٹیل بھی فرار ہو گیا تھا۔

پوسٹ مارٹم رپورٹ نے بدلی جانچ کی سمت

پولیس چھوٹے پٹیل کو تلاش رہی تھی کہ اس دوران گزشتہ دن لاش کی پوسٹ مارٹم رپورٹ آئی تو اسے دیکھ کر پولیس افسر حیران رہ گئے۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں نابالغ لڑکی کے ساتھ بہت سے لوگوں کی طرف سے ریپ کرنے کی تصدیق ہونے کے بعد پولیس نے جانچ شروع کی تو مقتولہ کے بڑے بھائی کے بھی لاش ملنے کے دن سے غائب ہونے کا پتہ چلا۔ پولیس نے اہل خانہ سے پوچھ گچھ کی تو مقتولہ کے دو بھائی اور چچا۔چاچی کی باتیں مشکوک نظر آئیں۔ رشتہ داروں نے پہلے بتایا کہ مقتولہ کی تلاش میں اس کا بڑا بھائی پاس کے گاؤں گیا ہے، جب پولیس نے وہاں جاکر پتہ کیا تو بات جھوٹ نکلی۔ شک ہونے پر پولیس نے ان سے الگ لے جاکر پوچھ گچھ کی تو مقتولہ کامنجھلا بھائی سب سے پہلے ٹوٹ گیا۔ سائنسی ثبوت کی بنیاد پر پولیس نے برجیش کے ٹوٹتے ہی سختی دکھائی تو گھناؤنی اور شرمسار کر دینے والی واردات کا انکشاف ہو گیا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *