پلوامہ انکاؤنٹر میں دہشت گردوں سے لوہا لیتے ہوئے شہید ہوا ہریانہ کا یہ لال، 3 بہنوں کا اکلوتا بھائی تھا ہری سنگھ

Share Article

 

ہری سنگھ فوجی خاندان سے تھے۔ والد اگڑی سنگھ بھی انڈین آرمی سے ریٹائرڈ تھے۔ دو سال پہلے ان کا انتقال ہو گیا۔ ہری سنگھ اپنے ماں باپ کے اکلوتے بیٹے تھے۔ ان کی تین بہنے ہیں۔ تینوں کی شادی ہو چکی ہے۔ والد کی موت کے بعد ہری سنگھ کے کندھوں پر 68 سالہ ماں پستا دیوی، بیوی اور بچے سمیت پورے پریوار کی ذمہ داری تھی۔

 

Image result for hari singh shaheed in pulwama

 

ریواڑی (ہریانہ) جموں و کشمیر میں پلوامہ سے قریب 10 کلومیٹر دور پگلینا گائوں میں پیر کی صبح دہشت گردوں سے انکاؤنٹر میں میجر سمیت ہندوستانی فوج کے چار جوان شہید ہو گئے۔ اس میں ریواڑی کے راج گڑھ گاؤں کے نوجوان ہری سنگھ بھی شامل ہیں۔ وہ 55 قومی رائفلس میں تھے۔ ان کی شہادت کی اطلاع کے بعد سے گاؤں میں غم کی لہر ہے۔حالانکہ، پریوار کی عورتوں کو ان کے شہید ہونے کی اطلاع نہیں دی گئی ہے۔

 

Image result for hari singh shaheed in pulwama

 

بیوی کی گود میں چھوڑ گئے 10 ماہ کا بیٹا
پڑوسی کا کہنا ہے کہ ہری سنگھ 2011 میں فوج میں بھرتی ہوئے تھے۔ وہ دسمبر میں 1 ماہ کی چھٹی پر گھر آئے تھے۔ 28 دسمبر کو کشمیر لوٹے تھے۔ ان کی ڈیوٹی 55 قومی رائفلز میں کشمیر کے پلوامہ میں ہوئی تھی۔ ان کی شہادت کی خبر سے گاؤں میں ماتم چھایا ہوا ہے۔ ہری سنگھ کی دو سال پہلے رادھا بائی سے شادی ہوئی تھی۔ ان کا 10 ماہ کا بیٹا ہے۔

 

Image result for hari singh shaheed in pulwama

ہری سنگھ فوجی خاندان سے تھے۔ والد اگڑی سنگھ بھی انڈین آرمی سے ریٹائرڈ تھے۔ دو سال پہلے ان کا انتقال ہو گیا۔ ہری سنگھ اپنے ماں باپ کے اکلوتے بیٹے تھے۔ ان کی تین بہنے ہیں۔ تینوں کی شادی ہو چکی ہے۔ والد کی موت کے بعد ہری سنگھ کے کندھوں پر 68 سالہ ماں پستا دیوی، بیوی اور بچے سمیت پورے پریوار کی ذمہ داری تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *