بنگال میں بی جے پی کے اشارے پر کام کر رہے مرکزی فورس کے جوان: ترنمول

Share Article

 

مغربی بنگال کی حکمراں پارٹی ترنمول کانگریس نے دعوی کیا ہے کہ آخری مرحلے کی پولنگ کے دوران کولکاتہ اور دیگرمتعلقہ علاقوں میں تعینات مرکزی فورس کے جوان بی جے پی کی مرکزی قیادت کے اشارے پر کام کر رہے ہیں۔ پارٹی کے ترجمان اور راجیہ سبھا ممبر پارلیمنٹ ڈیریک او برائن نے سہ پہر ساڑھے تین بجے کے قریب ایک بیان جاری کر کہا ہے کہ بنگال میں تعینات مرکزی فورسز کے جوان بے رحمانہ طریقے سے ترنمول کارکنوں کو پیٹ رہے ہیں، عام شہریوں پر فائرنگ کر رہے ہیں اور بم پھینک رہے ہیں۔ بیان میں ڈیریک او برائن نے کہا ہے کہ بی جے پی ہیڈ کوارٹر سے ہدایات ملنے کے بعد، مرکزی فورس کے جوان بنگال میں ایک بے مثال کردار ادا کر رہے ہیں۔ وہ بے رحمی سے ترنمول کارکنوں کی پٹائی کر رہے ہیں۔

 

 

ڈیریک نے کہا ہے کہ ہم تشدد کے خلاف ہیں اور چاہتے ہیں کہ ووٹنگ کا عمل پرامن رہے۔ لیکن بھاٹپاڑا اسمبلی ضمنی انتخابات میں بی جے پی تشدد کا سہارا لے رہی ہے۔ یہ جمہوریت کے لئے خطرناک ہے۔ ارجن سنگھ کے غنڈوں نے بم پھینکے اور یہاں تک کہ ترنمول کے امیدوار مدن مترا پر بھی حملہ کیا گیا۔ یہ ایک خوفناک صورت حال ہے جسے مرکزی فورسز کی مکمل حمایت کے ساتھ انجام دیا جا رہا ہے۔

 

 

غورطلب ہے کہ اس کے پہلے پولنگ کے موقع پر مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی نے بھی ایک خط مرکزی الیکشن کمیشن کو لکھی تھی جس میں انہوں نے دعوی کیا تھا کہ مرکز کی بی جے پی حکومت اپنے اقتدار کا استعمال بنگال میں ووٹنگ کے عمل میں مداخلت کرنے اور رکاوٹ ڈالنے کے لئے کرتی رہی ہے۔ آخری مرحلے میں ایسا نہیں ہونا چاہئے۔ اب اسی راہ پر چلتے ہوئے ڈیریک او برائن نے دعوی کیا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی ہدایت پر مرکزی فورسز کے جوان ووٹنگ کے عمل میں رکاوٹ بن رہے ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *