توہین عدالت معاملے میں پروفیسر شنموگم کو راحت، سپریم کورٹ نے بند کیا کیس

Share Article

 

۔ کورٹ نے کہا، دوبارہ ایسا نہ ہو اس شرط پر نہیں ہوئی کوئی کاروائی

سپریم کورٹ نے اجودھیا معاملے میں مسلم فریق کے وکیل راجیو دھون کو خط لکھ کردھمکی دینے والے تمل ناڈو کے پروفیسر شنموگم کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کو بند کر دیا ہے۔ چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے پروفیسر کے وکیل سے کہا کہ آپ 88 سال کے ہیں۔ آپ ایسا کیوں کر رہے ہیں؟ اس شرط پر ہم کیس بند کر رہے ہیں اور کوئی ایکشن نہیں لے رہے کہ دوبارہ ایسا نہ ہو۔

دراصل، پروفیسر نے راجیو دھون کو خط لکھے جانے پر افسوس ظاہر کیا۔ گزشتہ سماعت میں سپریم کورٹ نے پروفیسر کو نوٹس بھیجا تھا۔

سماعت کے دوران راجیو دھون اور سینئر وکیل کپل سبل نے کہا کہ ہمیں ان کے لئے کوئی سزا نہیں چاہئے۔ ہم صرف اس بات کو آپ کی نوٹس میں لانا چاہتے تھے۔ ہم صرف یہ کہنا چاہتے ہیں کہ اس ملک میں ایسا نہیں ہونا چاہئے۔ ہم اس معاملے کو بند کرنا چاہتے ہیں۔ سبل نے کہا کہ ہم صرف یہ چاہتے ہیں کہ پورے ملک میں یہ پیغام جائے کہ ایسا نہیں ہونا چاہئے۔ ہم ان کے خلاف کوئی کاروائی نہیں چاہتے۔

چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے پروفیسر کے وکیل سے کہا کہ آپ 88 سال کے ہیں۔ آپ ایسا کیوں کر رہے ہیں؟ اس شرط پر ہم کیس بند کر رہے ہیں اور کوئی ایکشن نہیں لے رہے کہ دوبارہ ایسا نہ ہو۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *