دہشت گردوں نے زندگی جہنم بنائی،دردبھری ہے ان لڑکیوں کی داستان

Share Article
shmima-begam-hoda-muthana
دہشت گرد تنظیم آئی ایس آئی ایس اب خاتمے کے دہانے پر ہے لیکن ایک وقت تھا جب اس دہشت گرد تنظیم کا خوف دنیا محسوس کر رہی تھی، دہشت گرد تنظیم کی تباہی مچانے کا منظر آپ کو بھی بخوبی یاد ہوگا، جس کے وائرل ویڈیو اتنے گھناؤنے ہوتے تھے کہ اسے دیکھنے سے صرف انسانی نفسیات پر گہرا اثر ہوتا تھا۔حالانکہ ا بھی بھی ISIS کا خطرہ مکمل طور پر ٹلا نہیں ہے۔ ایک وقت تھا جب ISIS دنیا کے نوجوانوں کو اپنی طرف متوجہ کر رہا تھا۔ اس کیلئے ISIS سوشل میڈیا کا سہارا لیتا تھا۔ ہندوستان کے بھی کچھ نوجوانوں کے ISIS سے جڑنے کی خبریں آئی تھیں۔اس خبر میں برطانیہ اور امریکہ سے بھاگی دو لڑکیوں کی داستان ہے جو 2014-15 کے قریب ISIS سے متاثر ہوئی تھی، لیکن وہاں پہنچنے پر انہیں پتہ چلا جیتے جی جہنم رسید کسے کہتے ہیں، اب جب یہ لڑکیاں دہشت گردوں کی قید سے بچ کر باہر نکلی ہیں اور اپنے ملک واپس جانا چاہ رہی ہیں تب ان کا ملک بھی انہیں نہیں قبول کررہا ہے۔
شمیمہ بیگم
shamima
برطانیہ کیاسکول گرل شمیمہ کی کہانی
سال 2015 میں برطانیہ کی اسکول جانے والی تین لڑکیاں ISIS سے جڑنے کے لیے شام بھاگ گئی تھیں۔ یہ لڑکیاںISIS سے کافی متاثر تھیں۔ISIS نے انہیں سوشل میڈیا کے ذریعے بہکایا تھا۔ ان لڑکیوں میں ایک شمیمہ بیگم بھی تھی۔ شمیمہ نے شام میں ایک ISIS دہشت گرد سے شادی کر لی تھی۔ 19 سال کی ہو چکی شمیمہ نے اب ایک بچے کو جنم دیا ہے۔ اس بچے کاجنم شام کے ایک پناہ گزین کیمپ میں ہوا ہے۔ شمیمہ اب اپنے بیٹے کو لے کر برطانیہ واپس آنا چاہتی ہیں۔ اس کے لئے انہوں نے برطانوی حکومت سے اجازت مانگی ہے۔ لیکن انہیں برطانیہ حکومت اس کے لئے تیار نہیں نظر آرہی ہے۔ برطانیہ کی عوام بھی شمیمہ کو لے کر دو فریقوں میں بٹ گئی ہے۔ وہیں، شمیمہ کے وکیل کا کہنا ہے کہ کیمپ میں ان کے ساتھ بہت برا سلوک کیا جا رہا ہے۔

ہڈا متھانا

hoda-muthana
امریکی لڑکی ہڈا کی کہانی
دوسری طرف، الباما نژاد کی امریکی خاتون ہڈا متھانا بھی اپنے ملک واپس لوٹنا چاہتی ہے۔ لیکن ان کا امریکہ واپس آنا بہت مشکل لگ رہا ہے۔ امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے خود ٹویٹ کرکے انہیں امریکہ نہیں آنے دینے کی بات کہی ہے۔ساتھ ہی امریکہ کے وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے بھی ہڈا کے امریکہ آنے کو لے کر کئی سارے سوال اٹھائے ہیں۔ پومپہو نے ہڈا کو امریکی شہری ماننے سے انکار کر دیا ہے۔ہڈا سال 2014 کے نومبر مہینے میں ISIS سے وابستہ ہوئی تھی.۔وہ بھی سوشل میڈیا کے ذریعے ISIS سے کافی متاثر ہوئی تھی۔ اور امریکہ سے بھاگ کر شام چلی گئی تھی۔ ہڈا نے ISIS کے تین صلیبیوں سے شادی کی تھی۔ وہ فی الحال کردش پناہ گزین کیمپ میں رہ رہی ہے۔ ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ جب میں نے امریکہ چھوڑا تب میں بہت پریشان اور غصے میں تھی۔ لیکن اب مجھے اپنے اس فیصلے پر بہت افسوس ہے اور میں واپس امریکہ لوٹنا چاہتی ہوں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *