حلف نامہ جھوٹا، انل امبانی سے SC نے کہا 1 مہینے میں لوٹاؤ 453 کروڑ، ورنہ جیل

Share Article

 

توہین کیس میں انل امبانی کو سپریم کورٹ سے جھٹکا لگا ہے۔ریلائنس گروپ کے سربراہ انل امبانی کی مشکلیں بڑھتی ہی جا رہی ہیں۔ ایک طرف رافیل سودے کو لے کر اپوزیشن کی جانب سے انل امبانی کو گھیرا جا رہا ہے تو وہیں اب انہیں توہین کیس میں جیل جانا پڑ سکتا ہے۔ دراصل، عدالت عظمی نے Ericsson ڈاؤن انڈیا کی درخواست پر انل امبانی کو توہین کا مجرم قرار دیا ہے۔کورٹ نے اس معاملے میں امبانی کے علاوہ کمپنی گروپ کے دو ڈائریکٹروں کو بھی قصوروار پایا ہے۔

 

 

کورٹ نے انل امبانی کو سخت لہجے میں Ericsson ڈاؤن انڈیا کو 4 ہفتوں کے اندر اندر 453 کروڑ روپے کی بقایا رقم دینے کو کہا ہے۔ ساتھ ہی یہ بھی کہا گیا ہے کہ میعاد کے اندر نہیں ادا پر تینوں کو تین تین ماہ کی قید کی سزا دی جائے گی۔سپریم کورٹ نے تینوں پر حکم کی معصیت کے لئے ایک ایک کروڑ روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔ انل امبانی کی جانب سے پیش ہوئے سینئر وکیل مکل روہتگی نے کہا، ‘ ہم سپریم کورٹ کے فیصلے کا احترام کرتے ہیں۔ مجھے یقین ہے کہ آرکام احکامات کا احترام کرے گا۔
غور طلب ہے کہ ریلائنس گروپ کے چیئرمین انل امبانی اور دیگر کے خلاف بقایا ادائیگی نہیں کرنے پر ٹیلی سامان ڈویلپر Ericsson ڈاؤن نے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا۔ معاملے کی سماعت جسٹس آر ایف نریمن اور ونیت سرن کی بنچ کر رہی هےبتا دیں کہ یہ توہین پٹیشن انل امبانی کے علاوہ ریلائنس ٹیلی کام کے صدر ستیش سیٹھ، ریلائنس انفرٹیل کی صدر سایا ویراني اور ایس بی آئی صدر کے خلاف دائر کی گئی تھی۔

 

Image result for anil ambani supreme court india

کیا تھا انل امبانی کی کمپنی کی دلیل
وہیں انل امبانی کی ریلائنس کمیونی کیشنز نے سپریم کورٹ میں دلیل دی تھی کہ بڑے بھائی مکیش امبانی کی ریلائنس جیو کے ساتھ املاک کی فروخت کا سودا ناکام ہونے کے بعد ان کی کمپنی دیوالیہ کے لئے اپیل ہے۔ایسے میں رقم پر اس کا کنٹرول نہیں هےرلايس کمیونی کیشنز نے کورٹ کو بتایا تھا کہ وہ Ericsson ڈاؤن لوڈ کے بكايے ادا کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کئے لیکن انہیں کامیابی نہیں ملی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *