بھاڑ میں گیا قانون، ضابطہ اخلاق بھی ہم دیکھ لیں گے: شیو سینا لیڈر سنجے راوت، ملاحظہ VIDEO

Share Article

 

بی جے پی کی اتحادی پارٹی شیوسینا کے لیڈر سنجے راوت نے انتخابات کے دوران ضابطہ اخلاق کو لے کر کہا ہے کہ ان کے لئے ضابطہ اخلاق کا کوئی مطلب نہیں ہے.

 

ممبئی: لوک سبھا انتخابات 2019 کے دوران سیاسی جماعتوں اور رہنماؤں کی طرف سے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے کئی معاملے سامنے آ رہے ہیں. تازہ معاملہ مہاراشٹر سے، جہاں شیوسینا کے سنجے راوت نے مثالی ضابطہ اخلاق کو لے کر متنازعہ بیان دیا ہے.بی جے پی کی اتحادی پارٹی شیوسینا کے لیڈر سنجے راوت نے انتخابات کے دوران ضابطہ اخلاق کو لے کر کہا ہے کہ ان کے لئے ضابطہ اخلاق کا کوئی مطلب نہیں ہے. وہ صرف آپ کے دماغ کی کرتے ہیں.
اتوار کو ایک اجتماع کے دوران شیوسینا لیڈر سنجے راوت نے انتخابات کے دوران ضابطہ اخلاق کو لے کر کہا کہ ‘ہم ایسے لوگ ہیں، بھاڑ میں گیا قانون، ضابطہ اخلاق بھی ہم دیکھ لیں گے. جو بات ہمارے ذہن میں ہے، وہ اگر مہ دماغ سے باہر نہیں نکالیں تو گھٹن سی ہوتی ہے. بتا دیں کہ سنجے راوت اپنے بیانات کو لے کر اکثر میڈیا کی شہ سرخیوں میں بنے رہتے ہیں.

 


غور طلب ہے کہ کچھ وقت تک تعلقات تلخ رہنے کے بعد بی جے پی اور شیوسینا نے ساتھ لوک سبھا انتخابات لڑنے کا فیصلہ لیا ہے. مہاراشٹر میں 48 لوک سبھا سیٹوں میں بی جے پی 25 سیٹوں پر جبکہ شیوسینا 23 سیٹوں پر انتخاب لڑے گی. وہیں، 288 رکنی ریاستی اسمبلی انتخابات میں اپنے اتحادیوں کو ان واجب شیئر دیتے ہوئے برابر-برابر تعداد میں سیٹوں پر انتخاب لڑا جائے گا.
بتا دیں کہ 2014 کا لوک سبھا انتخابات دونوں پارٹیوں نے ساتھ مل کر لڑا تھا. کل 48 سیٹوں میں بی جے پی نے 23، جبکہ شیوسینا نے 18 سیٹوں پر کامیابی حاصل کی تھی. وہیں، 2014 کے اسمبلی انتخابات دونوں پارٹیاں اپنے اپنے بوتے لڑی تھی. لوک سبھا انتخابات ملک بھر میں 7 مراحل میں ہوں گے، جو 11 اپریل سے شروع ہو گی اور 19 مئی چل چلے گی. ووٹوں کی گنتی کی تاریخ 23 مئی ہے.

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *