تعلیم یافتہ بے روزگار نوجوانوں کو کھیتی کے لیے زمین دے گی کمل ناتھ حکومت

Share Article

 

مدھیہ پردیش کی حکومت کا کسانوں اور بے روزگاروں پر خاص زور ہے، اور وہ اسی لحاظ سے منصوبوں کو عملی جامہ پہنا رہی ہے۔ اسی عمل میں حکومت تعلیم یافتہ بے روزگاروں کو فصل اگانے کے لیے زمین دینے کے لیے پالیسی بنانے جا رہی ہے۔ وزیر اعلیٰ کمل ناتھ نے منگل کے روز متعلقہ محکمہ کی سرگرمیوں کا جائزہ لیا۔ اس جائزہ میٹنگ میں وزیر اعلیٰ کمل ناتھ نے تعلیم یافتہ بے روزگاروں کو فصلوں کے لیے زمین کے استعمال کا حق دینے سے متعلق نئی پالیسی جلد بنانے کی ہدایت دی ہے۔

ذرائع کے مطابق ریاست میں ایسی سرکاری زمینوں کو نشان زد کیا جائے گا جہاں پانی کا انتظام ہو۔ اس زمین پر محدود زراعت مثلاً پھول-پھل، سبزیاں اور ایکزوٹک فصلیں ا?رنامینٹل نرسری کے ساتھ ہی ٹیشو کلچر وغیرہ اْگائے جائیں گے۔وزیر اعلیٰ کمل ناتھ نے بے روزگاروں کے لیے روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے ساتھ ہی طے کیا ہے کہ نشان زد زمین تعلیم یافتہ بے روزگاروں کو دی جائے تاکہ وہ اس کے ذریعہ اپنے لیے روزگار کے وسائل تیار کر سکیں۔ ذرائع کے مطابق ریاست میں وزیر اعلیٰ باغبانی فوڈ پروسیسنگ منصوبہ کے ذریعہ ا?رکڈ پارک قائم کیے جانے کا منصوبہ ہے۔ پھولوں کی کھیتی کو فروغ دینے کے لیے پڑھے لکھے نوجوانوں کو انڈسٹریل ڈیولپمنٹ سنٹر کے ذریعہ سے ایک ایکڑ سے ڈھائی ایکڑ تک زمین کے تیار کردہ پلاٹ الاٹ کیے جائیں گے۔ ان میں سڑک، بجلی، پانی وغیرہ کا انتظام بھی حکومت کے ذریعہ کرایا جائے گا۔

حکومت نے نوجوانوں کو باغبانی والی فصلوں کے لیے زمین دینے کے منصوبہ پر کام شروع کیا ہے۔ یہ زمین کس بنیاد پر، کس نوجوان کو اور کتنے وقت کے لیے دی جائے گی، اس کا خاکہ تیار کرنے کے بعد ہی واضح ہو سکے گا۔ قابل ذکر ہے کہ کمل ناتھ حکومت ایک طرف کسانوں کا دو لاکھ روپے تک کا قرض معاف کر رہی ہے تو دوسری طرف شہری نوجوانوں کے لیے ’یوا سوابھیمان یوجنا‘ شروع کی گئی ہے۔ اس منصوبہ میں نوجوانوں کو سال میں 100 دن کا کام دیا جا رہا ہے جس کے تحت انھیں ہر ماہ 4 ہزار روپے اور زیادہ سے زیادہ 13 ہزار روپے ملیں گے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *