کیا ہے عبوری بجٹ، جانیں کیوں اس میں بندھے ہوئے رہتے ہیں حکومت کے ہاتھ

Share Article

آئین کے مطابق مرکزی حکومت پورے ایک سال کے علاوہ جزوی وقت کے لئے بھی یہ حساب کتاب پارلیمنٹ میں پیش کر سکتی ہے۔ اگر حکومت اپنے آمدنی اور خرچ کا یہ حساب کتاب کچھ ماہ کے لئے پیش کرے تو اسے عبوری بجٹ یا ووٹ آن اکاونٹ قرار دی جاتی ہے۔ عبوری بجٹ کو لیکھا جوکھامطالبہ اور منی بجٹ بھی کہتے ہیں۔

 

 

مرکز میں نریندر مودی حکومت اپنا پانچ بجٹ پیش کرنے کے بعد اب عبوری بجٹ پیش کرنے جا رہی ہے۔ آئین میں کئے دفعات کے مطابق مرکزی حکومت ہر سال ان کی مدت کی سالانہ حساب کتاب پارلیمنٹ میں پیش کرتی ہے۔ اس حساب کتاب میں جہاں ایک طرف وہ اپنی سالانہ آمدنی بتاتی ہے وہیں دوسری طرف وہ اپنے ایک سال کے خرچ کا مکمل ذکر کرتی ہے۔اس پورے حساب کتاب کے لیے عام بجٹ یا مکمل بجٹ کہا جاتا ہے۔ ایسے میں عبوری بجٹ کیا ہے اس کے لئے آئین کا سہارا لینے کی ضرورت ہے اور آخر کب اور کیوں مرکزی حکومت عبوری بجٹ پیش کرتی ہے؟آئین کے مطابق مرکزی حکومت پورے ایک سال کے علاوہ جزوی وقت کے لئے بھی یہ حساب کتاب پارلیمنٹ میں پیش کر سکتی ہے۔ اگر حکومت اپنے آمدنی اور خرچ کا یہ حساب کتاب کچھ ماہ کے لئے پیش کرے تو اسے عبوری بجٹ یا ووٹ آن اکاونٹ قرار دی جاتی ہے۔ عبوری بجٹ کو لیکھا جوکھا مطالبہ اور منی بجٹ بھی کہتے ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ جہاں مکمل بجٹ میں مرکزی حکومت پورے ایک سال کی آمدنی کی حیثیت کے ساتھ خرچ کی تفصیلات دیتی وہیں اس مکمل بجٹ کے لئے پارلیمنٹ سے گرانٹ سہ ماہی یا ششماہی بنیاد پر ہی لیتی ہے اور اس کے لئے مکمل بجٹ کے بعد بھی وہ ووٹ آن اکاؤنٹ کا استعمال کرتی ہے۔ ووٹ آن اکاونٹ عام طور پر مرکزی حکومت انتخابی سال میں کرتی ہے۔ پارلیمانی نظام کے مطابق پارلیمنٹ میں بجٹ 1 فروری کو پیش کرنا ہوتا ہے۔ یہ بجٹ حکومت آنے والے مالی سال کے لئے دیتی ہے۔ لیکن انتخابی سال میں یہ ضروری ہو جاتا ہے حکمراں حکومت اپنے اخراجات اور آمدنی کی تفصیلات صرف انتخابی عمل مکمل ہونے تک محدود رکھے۔جس سے نئی حکومت تشکیل ہونے کے بعد مالی سال کے بچے ہوئے وقت کے لئے وہ اپنا عام بجٹ لے کر آ سکے۔

 

 

مرکز میں موجودہ حکومت کی مدت مئی وسط کے بعد ختم ہو جائے گا اور ملک میں انتخابی عمل فروری کے وسط کے بعد کسی وقت شروع کی جا سکتی ہے۔ وہیں مئی میں نئی حکومت کے قیام کے بعد جون-جولائی میں پہلے پارلیمنٹ سیشن کے دوران نئی حکومت رواں مالی سال کی عام بجٹ پیش کرے گی۔

 

 

غور طلب ہے کہ پارلیمانی روایت کے مطابق انتخابات میں جا رہی حکمراں حکومت اس عبوری بجٹ میں کسی بڑے خرچ کا انتظام نہیں کرتی ہے۔ ایسا اس جس سے ملک میں قائم ہونے والی نئی حکومت آپ کی آمدنی اور اخراجات کا تعین کرنے کے لئے مکمل طور پر آزاد رہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *