کشمیر میںمعمولات زندگی کی بحالی جلد ہونی چاہئے
شاہی امام مسجد فتحپوری دہلی مولانا ڈاکٹر مفتی محمد مکرم احمد نے آج نماز جمعہ سے قبل خطاب میںمسلمانوںکو تاکیدکی کہ ماہ محرم کا استقبال نفلی روزوں ، نفلی نمازوں کے ساتھ کریں او ر آنے والے سال میں امن و سلامتی ، ترقی اور خوشحالی کیلئے خوب دعائیں کریں ۔انہوںنے کہا کہ ۲۹ذی الحجہ بروز ہفتہ مسجد فتح پوری میں رویت ھلال کمیٹی کا جلسہ ہوگا عینی شاہدین شہادت پیش کریں تاکہ عاشورہ کے دن کا تعین ہو سکے ۔
مفتی مکرم نے ماب لنچنگ کے بڑھتے ہوئے واقعات پر شدید تشویش کا اظہار کیا ۔پرانی دہلی ریلوے اسٹیشن کے پاس 26 اگست کوقاری محمد اویس کو شر پسند عناصر نے بے رحمی کے ساتھ زدو کوب کرکے ہلاک کر دیا اور جگہ جگہ اس طرح کے واقعات پیش آرہے ہیں اس سے ہر امن پسند شہری پریشان ہے ، بچہ چوری کے شبہ میںبہت سے لوگوں کو ہلاک کر دیا گیا ۔ایسا لگتا ہے کہ جرائم پیشہ عناصر بے خوف اپنی واردات انجام دے رہے ہیں اور پولس پوری طرح سے ناکام نظر آرہی ہے ۔حکومت اس سلسلہ میں فوری اقدام کرے اگر پولیس میں مزید اہل کاروں کی ضرورت ہے انہیں بھرتی کیا جائے ۔انہوںنے مطالبہ کیا کہ لنچنگ میںہلاک ہونے والوں کیلئے معقول معاوضہ مقرر کیا جائے اور شرپسندلوگوں کیلئے سخت قانون بنایا جائے ۔کشمیر میں25روز سے زندگی مفلوج ہے ۔
لوگ کرفیو میںبند ہیں ، موبائل اور ٹیلی فون کی خدمات بھی معطل ہیں ان کی بحالی جلد ہونی چاہئے ۔ایک محلہ میں اگر کوئی بیمار ی سے مر جاتا ہے تو دوسرے محلہ میں رشتہ داروں کو بھی پتہ نہیں لگتا ، رشتہ دار جنازہ میں شریک نہیں ہو پاتے ، بیما ر اور بچے سب پریشان ہیں اس طرف جلد توجہ ہونی چاہئے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here