لڑکی نے سیکس سے منع کیا تو کردی یہ وحشیانہ حرکت

Share Article

ڈیٹنگ ویب سائٹ اور ایپ کے ذریعہ رشتے جڑتے ہیں ، لیکن ایک سچ یہ بھی ہے کہ کچھ لوگوں کیلئے یہ ذرائع جان لیوا ثابت ہوتے ہیں ۔ ایسا ہی کچھ روتھ کے ساتھ پیش آیا ۔ ایک ڈیٹنگ ایپ پر اس کی ملاقات ایک شخص سے ہوئی ۔ دونوں کے درمیان سوشل میڈیا کے ذریعہ محبت ہوئی اور پھر ڈیٹنگ شروع ہوگئی ، لیکن رشتہ کسی مقام پر پہنچتا ، اس سے پہلے ہی ایسا موڑا آگیا کہ روتھ کی لاش تو کیا ، پورام کنکال تک نہیں مل پایا ۔

Image result for rape

کوئی جاذب نظر چیز خطرناک بھی ہوسکتی ہے ۔ سوشل میڈیا اور انٹرنیٹ پر دوستوں سےباتیں کرتی اور دوست بناتی 26 سال کی روتھ کو اس بات کا علم بھی نہیں تھا ۔ اپنی زندگی مستی میں گزاررہی روتھ یونیورسٹی سے اپنا کورس پورا کرنے میں مشغول تھی ۔ سینٹرل میکسکو کے لیون علاقہ میں اپنے اہل خانہ کے ساتھ رہنے والی روتھ کی زندگی میں اس کے اہل خانہ اور کچھ خاص دوست تھے ، تبھی ڈیٹنگ ایپ ٹنڈر پر روتھ کی پہچان امینوول عرف نوئل سے ہوئی ۔

میڈیکل کا طالب علم رہ چکا 26 سال کا نوئل بھی خوبصورت اور جاذب نظر تھا ۔ روتھ کے ساتھ تعارف کا سلسلہ آگے بڑھا اور پھر دونوں کے درمیان چیٹنگ کا سلسلہ شروع ہوگیا ۔ دونوں میکسیکو میں رہتے تھے اور روتھ کے کچھ دوست نوئل کے بھی دوست یا شناسا رہ چکے تھے ، کیونکہ وہ ان کے ساتھ ایک ہی یونیورسٹی میں پڑھا ئی کرچکا تھا ۔

دیکھتے ہی دیکھتے روتھ اور نوئل کی شناخت دوستی میں بدل گئی اور دونوں ملاقات کرنے لگے ۔ ان ملاقاتوں کے دوران دونوں کو ایک دوسرے کا ساتھ پسند آنے لگا اور نوئل نے ایک دن روتھ سے اپنے پیار کا اظہار کردیا ۔ روتھ نے بھی ہاں کہہ دی اور اب دونوں ایک دوسرے کو ڈیٹ کرنے لگے تھے ، لیکن دونوں کے درمیان جسمانی تعلقات ابھی تک قائم نہیں ہوئے تھے ۔ ایک دوسرے کا ہاتھ پکڑنے ، گلے ملنے اور بوسہ لینے تک ہی بات محدود تھی ۔

سلسلہ اسی طرح جاری رہا ، مگر نوئل بے چین ہورہا تھا ۔ اسی درمیان نوئل نے ایک دن میکسیکو سٹی کے اپنے گھر میں روتھ کو بلایا ۔ آوٹ سائیڈ رومانٹنگ ڈیٹس دونوں کرچکے تھے اور تبدیلی کی خاطر نوئل کی بات تسلیم کرلی ۔ وہ تین دسمبر 2016 کو نوئل سے ملنے کیلئے اس کے گھر گئی۔ اس ملاقات کے بعد روتھ نے اپنے دوستوں کے ساتھ فلم دیکھنے کا منصوبہ بنا رکھا تھا اور اس بارے میں وہ اپنے دوستوں کے ساتھ ملنے کی جگہ اور وقت بھی متعین کرچکی تھی ۔ تاہم نوئل کو اس کا کچھ علم نہیں تھا ۔

روتھ اس کے گھر پہنچی تو کافی وغیرہ کے بعدنوئل اس کو اپنے بیڈروم میں لے گیا ۔ کچھ چھیڑ چھاڑ تک تو روتھ ٹھیک رہی ، لیکن نوئل پوری طرح سے اس کے ساتھ سیکس کرنے کے موڈ میں آچکا تھا ۔ روتھ نے اس پر اعتراض کیا اور کہا کہ وہ رشتے میں اتنی جلد بازی نہیں کرنا چاہتی ۔ اس دن نوئل کچھ بھی سننے کے موڈ میں نہیں تھا ۔ اس نے روتھ کو پہلے منانے کی کوشش کی ، لیکن جب وہ نہیں مانی تو اس کو بستر پر لٹادیا ۔

Image result for rape

اس کے بعد نوئل نے روتھ کے ساتھ زبردستی کرنے کی کوشش کی ۔ اب روتھ ناراض ہوچکی تھی اور پوری شدت سے نوئل کی مخالفت کررہی تھی ۔ دوسری طرف نوئل بھی پوری طاقت سے کپڑے پھاڑنے اور اس کو قابو کرنے میں لگا ہوا تھا ۔ اسی ہاتھا پائی کے دوران ایک گلدان روتھ کے ہاتھ لگا تو اس نے اس کو اٹھا کر نوئل کی کان کے پاس دے مارا ۔ نوئل درد سے کان پکڑ کر الگ ہٹا تو روتھ اپنے کپڑے سنبھال کر بستر سے اٹھنا چاہی۔

اب نوئل انتہائی مشتعل ہوچکا تھا اور اس کے ہاتھ میں بستر کے پاس رکھا ورزش کرنے والا یک ڈمبل آگیا ۔ روتھ اس کو کوستے ہوئے بستر سے اٹھنے لگی ، تو نوئل نے وہ ڈمبل اٹھاکر اس کے سر پر مار دیا ۔ روتھ کچھ ہی سکینڈس میں بےہوشی کے عالم میں چلی گئی ۔ نوئل نے طیش میں روتھ پر مزید وار کئے اور وہ نڈھال ہوکر بستر پر گر گئی ۔ اب بھی نوئل کا غصہ ٹھنڈا نہیں، اس لئے اس نے پھر روتھ کے کپڑے پھاڑے اور اپنی جسمانی بھوک مٹانے کی کوشش کی ۔

تاہم اس کوشش کے دوران نوئل کو احساس ہوا کہ روتھ دم توڑ چکی ہے ، تب وہ گھبرا کر روتھ پر سے ہٹا اور اپنا سر پکڑ کر بیٹھ گیا ۔ اس کو اچانک احساس ہوا کہ وہ قتل کر بیٹھا ہے ۔ کچھ دیر سوچنے اور خود کو قابو کرنے کے بعد نوئل نے اس قتل کا اعتراف کرنے سے بہتر اپنے جرم کے ہر سراغ کو مٹانا سمجھا ۔ سب سے پہلے اس نے روتھ کا موبائل فون سوئچ آف کیا ۔

اس کے بعد اس نے اپنے گھر کی بالکنی میں ایک ٹینک میں کاسٹک سوڈا اور ہائیڈوکلورک ایسڈ کے ذریعہ ایک خطرناک ایسڈ تیار کیا ۔ اس تیاری کے بعد نوئل نے کچھ دھاردار ہتھیاروں کی مدد سے بڑی احتیاط کے ساتھ ایک چادر پر روتھ کی لاش رکھ کر اس کے کچھ ٹکڑے کئے اور ان ٹکڑوں کو ایسڈ میں ڈال دیا ۔ اس ایسڈ میں لاش کے ٹکڑوں کو گلنے میں کچھ وقت لگنے والا تھا ، اس دوران نوئل نے کمرے کی اچھی طرح صفائی کی اور سارے سامان کو پہلے کی طرح رکھ دیا، جو ہاتھا پائی کی وجہ سے منتشر ہوگئے تھے ۔

ایسڈ میں روتھ کی لاش گل چکی تھی ، بس کچھ ہڈیاں بچ گئی تھیں ، جس کو نوئل نے ایسڈ سے باہر نکالا اور کچڑے کے تھیلے میں بند کرکے بالکنی میں رکھ دیا اور انہیں ٹھکانے لگانے کی بابت سوچنے لگا ۔ روتھ کا بیگ اور اس کے کچھ کپڑے بھی نوئل نے چھپاکر رکھ دئے اور انہیں ٹھکانے لگانے کیلئے اس نے ایک صحیح جگہ تلاش کی ۔ اس درمیان دوسری طرف یہ ہورہا تھا کہ فلم دیکھنے روتھ نہیں پہنچی تو اس کے دوستوں نے اس سے رابطہ کرنے کی کوشش کی ۔

جب روتھ سے رابطہ نہیں ہوسکا تو اس کے سوشل میڈیا سے دوستوں نے پتہ لگایا کہ وہ کسی نوئل کے ساتھ ڈیٹنگ کررہی تھی ۔ ادھر روتھ کے گھر نہ لوٹنے اور دوستوں و اہل خانہ کو کچھ خبر نہ ہونے کی وجہ سے روتھ کی گمشدگی کی رپورٹ درج کروائی گئی ۔ پولیس نے ہاتھ لگے سراغوں اور دوستوں و اہل خانہ کے بیانات کی بنیاد پر روتھ کی تلاش شروع کی ۔ نوئل کو اس بات کی بھی بھنک سوشل میڈیا سے لگ چکی تھی کہ پولیس میں خبر کی جاچکی ہے اور نوئل کو ڈھونڈا جارہا ہے ۔

اس خبر کے ملتے ہی نوئل ڈر چکا تھا اور وہ وہاں سے فرار ہوگیا ۔ پولیس نوئل کے گھر پہنچی لیکن وہاں نہیں تھا ، البتہ اس کے گھر سے بہت کچھ مل گیا ۔ انسانی جسم کی ہڈیاں ، روتھ کا بیگ اور کچھ کپڑے اور ایسڈ کا ایک چھوٹا سا ٹینگ وغیرہ ۔ پولیس کو پورا معاملہ سمجھ میں آچکا تھا کہ روتھ کا قتل کس نے کیا اور کیسے کیا ۔ تقریبا تینوں ہفتوں کی تلاش کے بعد پولیس کو نوئل بھی ہاتھ لگ گیا تو قاتل کی زبانی سب کچھ پتہ چلا اور کہانی ختم ہوگئی ۔

یہ کہانی حقیقی واقعات پر مبنی ہے ۔اس کے کردار اور نام حقیقی ہیں  ۔

بھاویش سکسینہ کی رپورٹ

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *