ودیا ساگرکی مورتی ٹوٹنے پر الیکشن کمیشن نے مانگی رپورٹ، ریاست بھر میں احتجاج

Share Article

vidyasagar

کولکاتہ: بھارتیہ جنتا پارٹی کے قومی صدر امت شاہ کے روڈ شو میں حکمراں ترنمول کے کارکنوں کے حملے کے بعد ودیاساگر کالج میں ودیاساگر کی مورتی سمیت دیگر جگہوں پر ہوئی توڑ پھوڑ کے خلاف ریاست بھر میں احتجاج شروع ہو گیا ہے۔ ریاست کے چیف الیکشن افسر عارض آفتاب نے اس معاملے میں کولکاتہ پولیس سے رپورٹ طلب کی ہے۔
ایک طرف بائیں بازو کارکنوں نے اسے لے کر حکمران ترنمول اور بی جے پی کو مشترکہ طور پر ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے احتجاج شروع کیا ہے تو وہیں ترنمول کانگریس نے بھی بی جے پی کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔پارٹی کی طرف سے صبح 10 بجے سے کولکاتہ سمیت ریاست کے ہر ضلع ہیڈکوارٹر کے قریب احتجاج اور میمورینڈم دینے کا پروگرام شروع ہو چکا ہے۔ بی جے پی نے اس معاملے کو لے کر کہا ہے کہ حکمراں ترنمول کے لوگوں نے ہی امت شاہ کے روڈ شو میں پتھربازی شروع کی تھی جس کی وجہ سے تشدد کی شروعات ہوئی۔
بی جے پی نے کہا ہے کہ ودیا ساگرکالج کے اندر مہرشی ودیاساگر کی مورتی توڑنے کے پیچھے ترنمول کانگریس کے کارکن ہی ذمہ دار ہیں کیونکہ جب یہ واقعہ ہو رہاتھاتب بی جے پی کے کارکن باہر تھے۔ ایسے میں ودیاساگر کی مورتی توڑی کس نے؟ بھارتیہ جنتا خواتین مورچہ کی جانب سے احتجاج کا پروگرام طے کیا گیا ہے، جبکہ سی پی ایم کے طالب علم تنظیموں نے بدھ کی صبح ہی دھرم تلہ، کالج اسٹریٹ، کالج اسکوائر وغیرہ جگہوں پر احتجاج شروع کر دیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *