آئی ایم ٹی زمین معاملے میں ایم پی کے وزیر اعلی کمل ناتھ کی بڑھ سکتی ہیں مشکلیں

Share Article

 

چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی نے بھی قائم کی جانچ کمیٹی

 

راج نگر واقع انسٹی ٹیوٹ آف مینجمنٹ ٹیکنالوجی (آئی ایم ٹی) کے لئے غیر قانونی طریقے سے قبضہ کی گئی جی ڈی اے کی ایک ارب سے زیادہ قیمت کی زمین کے معاملے میں اتر پردیش کے گورنر رام نائک نے ریاست کے وزیر اعلیٰ کو سی اے جی اور سی بی آئی جانچ کرانے کے لئے خط لکھا ہے۔ اس انسٹی ٹیوٹ کا انتظام مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی کمل ناتھ اور ان کے لواحقین کرتے ہیں۔تحقیقات میں معاملہ صحیح نکلنے پر کمل ناتھ کی مشکلیں بڑھ سکتی ہیں۔

 

پیر یہاں آر ڈی سی میں ایک پریس کانفرنس میں بی جے پی کے سینئر کونسلر راجندر تیاگی نے گورنر کی طرف وزیر اعلی کو لکھے گئے خط کی کاپی بھی صحافیوں کو تقسیم کی۔ بی جے پی کے سینئر کونسلر راجندر تیاگی نے 24 مارچ کو اس انسٹی ٹیوٹ کو زمین الاٹ کرنے میں برتی گئی بے ضابطگیوں اور جعلسازی کا انکشاف کرتے ہوئے پردیش کے گورنر اور وزیر اعلی کو خط لکھے تھے۔خط میں الزام لگائے گئے تھے کہ جس زمین پرآئی ایم ٹی کی عمارت کھڑی ہے، وہ زمین حقیقت میں لاجپت رائے کالج کے لئے جی ڈی اے نے الاٹ کی تھی، لیکن آئی ایم ٹی کے آپریٹرز نے ڈگری کالج بنانے کے بجائے اس پر مینجمنٹ کی تعلیم کے لئے عظیم انسٹی ٹیوٹ کھول دیا۔ انسٹی ٹیوٹ کی زمین کا کوروایریا 54 ہزار مربع میٹر ہے جس کی قیمت ایک ارب روپے سے زیادہ ہے۔ انہوں نے یہ الزام بھی لگایا ہے کہ انسٹی ٹیوٹ نے 10 ہزار مربع میٹر سے زیادہ کی زمین پر غیر قانونی قبضہ کر رکھا ہے۔

 

ادھر، چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی میرٹھ نے بھی معاملے کی جانچ کے لئے چار رکنی کمیٹی قائم کر دی ہے۔ یہ کمیٹی اآئی ایم ٹی کے ذریعہ برتی گئی بے ضابطگیوں کوچیک کرکے اس کی اطلاع ریاست کے گورنر کو سونپے گی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *