دہلی حکومت ایک ہفتے میں 50 پرنسپل کو ان کے پرانے اسکول میں تعینات کرے: دہلی ہائی کورٹ

Share Article

 

دہلی ہائی کورٹ نے دہلی حکومت کو ہدایت دی ہے کہ وہ ایک ہفتے کے اندر اسکولوں کے 50 پرنسپل کی ان کے اسکول میں تعینات کریں، جو گزشتہ تین سالوں سے پرنسپل کی ذمہ داری نہیں نبھا رہے ہیں اور انہیں کہیں دوسری جگہ تعینات کیا گیا ہے۔ کورٹ نے یہاں تک کہا کہ اگر کسی پرنسپل کو عدالت میں بھی تعینات کیا گیا ہے تو انہیں ان کے پرانے اسکول میں تعینات کیا جائے۔ کورٹ نے دہلی حکومت کے ایجوکیشن ڈائریکٹوریٹ کو اس سلسلے میں حلف نامہ داخل کرنے کی ہدایت دی۔معاملے کی اگلی سماعت ایک مئی کو ہوگی۔

 

Image result for The Delhi government should appoint 50 principal

جسٹس ناظم وزیری نے ڈی ایس ایس ایس بی کو ہدایت دی کہ وہ ایجوکیشن ڈائریکٹوریٹ کی جانب سے دو ہفتے قبل 10591 اساتذہ کی بھرتی کے لئے کی گئی درخواست پر جلد کارروائی کریں۔ کورٹ نے ان اساتذہ کی تقرری کے لئے اٹھائے گئے اقدامات کی معلومات حلف نامہ کے ذریعے کورٹ کو دینے کی ہدایت دی۔

 

 

کورٹ نے دہلی حکومت اور ڈی ایس ایس ایس بی کو ہدایت دی کہ وہ اساتذہ کے خالی پڑے عہدوں پر براہ راست یا پروموشن کے ذریعہ تقرری کرنے کے بارے میں اسٹیٹس رپورٹ داخل کریں۔ سماعت کے دوران درخواست گزار کے وکیل اشوک اگروال نے کورٹ کو اطلاع دی کہ آج کی تاریخ میں دہلی کے سرکاری اسکولوں میں 35 ہزار اساتذہ کے عہدے خالی ہیں جبکہ شہر کارپوریشن کے اسکولوں میں چھ ہزار اساتذہ کے عہدے خالی ہیں۔ کورٹ نے دہلی حکومت اور دہلی کی شہر کارپوریشنوں کو ہدایت دی کہ وہ اپنے اپنے اسکولوں کے لئے کھیل کے میدان کی شناخت کریں اور وہاں فٹ بال کا گول پوسٹ تلاش کریں۔ کورٹ نے کہا کہ فٹ بال کا گول پوسٹ لگانے کے حکم کی تعمیل سے متعلق رپورٹ حلف نامہ میں تصویر کے ساتھ داخل کریں۔

 

Image result for The Delhi government should appoint 50 principal

 

دہلی کے سرکاری اسکولوں میں دس ہزار سے زیادہ اساتذہ کے اضافی عہدے کی بھرتی کے لئے اشتہارات ہٹانے کے لئے ہدایات جاری کرنے کے لئے دائر عرضی پر سماعت کے دوران کورٹ نے یہ حکم جاری کیا۔
درخواست میں کہا گیا ہے کہ اس سلسلے میں ہائی کورٹ میں ایک درخواست زیر التواء ہے جس میں دہلی حکومت نے اپنے حلف نامے میں کہا تھا کہ 2017-18 میں اضافی اساتذہ کے خالی جگہوں کو بھرنے کے لئے کافی پہلے ڈی ایس ایس ایس بی کو درخواست بھیجی جا چکی ہے لیکن اس کے بعد بھی تقرری کا عمل شروع نہیں کیا گیا ہے۔ تقرری کا عمل مکمل ہونے میں 8-10 ماہ کا وقت لگتا ہے۔ تو ان عہدوں پر تقرری کے لئے ڈی ایس ایس ایس بی کو اشتہارات جاری کرنے کی ہدایت جاری کی جائے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *