مرکزی وزیر توانائی آر کے سنگھ کے سیکرٹری پر تھانہ انچارج نے چلائی گولی، بال بال بچے

Share Article

 

آرا لوک سبھا حلقے میں انتخابات کے دوران این ڈی اے امیدوار اور مرکزی توانائی وزیر آر کے سنگھ کے سیکریٹری پر مفصل تھانہ انچارج نے گولی چلا دی اور بی جے پی کارکنوں کو تھانہ کے باہر دوڑا دوڑا کر پیٹا۔

 

انتخابات کے دوران بھوجپور کے ڈی ایم اور ایس پی کے مبینہ متعصبانہ رویہ کو لے کر این ڈی اے امیدوار آر کے سنگھ نے مرکزی وزارت داخلہ سے شکایت کی ہے۔آر کے سنگھ کی شکایت پر وزارت داخلہ نے بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار اور ریاست کے ڈی جی پی سے بات چیت کی ہے۔ آر کے سنگھ نے ڈی ایم اور ایس پی کو فوری طور پر ہٹانے کا الٹی میٹم دیا ہے۔

 

وزارت داخلہ کو انہوں نے بتا دیا ہے کہ ووٹوں کی گنتی سے پہلے اگر ڈی ایم ایس پی کو نہیں ہٹایا گیا تو وہ بھوک ہڑتال شروع کر دیں گے۔ آر کے سنگھ کی بھوک ہڑتال کے اعلان کے بعد بہار حکومت بھی حرکت میں آ گئی ہے اور سمجھا جاتا ہے کہ جلد ہی ڈی ایم اور ایس پی کو آرا سے ہٹا دیا جا سکتا ہے۔

 

ادھر مفصل تھانہ انچارج کی کارروائی کو لے کر بھی آر کے سنگھ کے تیور گرم ہیں اور تھانہ انچارج کے خلاف بھی سخت کارروائی طے مانی جا رہی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ آراسے بی جے پی امیدوار آر کے سنگھ کے سیکرٹری سندیپ کمار مٹو پر بھوجپور مفصل تھانہ انچارج روندر رام نے گولی چلائی ہے۔ اس حملے میں سندیپ کمار مٹو بال بال بچ گئے۔واقعہ انتخابات کے بعد اتوار کی دیر شام کاہے۔ تھانہ انچارج نے اس کے بعد منٹوکے ساتھ گئے بی جے پی کارکن شمبھو چورسیا سے مارپیٹ شروع کردی اور انہیں زخمی کر دیا۔

 

بھارتی عوام یووا مورچہ کے آراضلع کے کنوینر راگھویندر کمار اور آنند کمار سنگھ بی جے پی کے شہر نائب صدر کو بھی بری طرح مارا پیٹا۔ روندر رام پر پہلے بھی عوامی نمائندوں پر حملے کا الزام لگتا رہا ہے۔ جون 2018 میں انہوں نے پنچایت کمیٹی رکن سے بھی مارپیٹ کی تھی اور بے سبب 2 گھنٹے جیل میں رکھا تھا۔

 

اس واقعہ پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے آر کے سنگھ نے تھانہ انچارج کو برخاست کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ آرا ضلع کے ڈی ایم اور ایس پی کو ٹرانسفرکرنے کے بعد ہی ووٹوں کی گنتی شروع کی جائے کیونکہ ان کے رہتے ای وی ایم محفوظ نہیں ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *