آئی ایس بی چندرکلا کے گھر سی بی آئی کا چھاپہ

Share Article
B. Chandrakala IAS

بتا دیں کہ اکھلیش یادو کی حکومت میں بي چندركلا آئی اے ایس کی پوسٹنگ پہلی بار ہمیر پور ضلع میں ضلع مجسٹریٹ کے عہدے پر کی گئی تھی۔ الزام ہے کہ اس آئی اے ایس نے جولائی 2012 کے بعد ہمیر پور ضلع میں 50 مورنگ کی کان کنی کی لیز کئے تھے۔

 

 

یوپی کے ہمیر پور میں ہوئے غیر قانونی کانکنی کے معاملے میں سی بی آئی نے ہفتہ کو اس وقت کے ڈی ایم بي چندركلا کے لکھنؤ رہائش گاہ پر چھاپہ مارا۔ ٹیم نے گھر سے کئی اہم دستاویزات ضبط کئے ہیں۔ صفائیر اپارٹمنٹ کے فلیٹ نمبر 101 میں سی بی آئی کی ٹیم موجود ہے۔ فی الحال کارروائی جاری ہے۔ سی بی آئی کی ایک ٹیم ہمیر پور میں بھی چھاپہ ماری کر رہی ہے۔ جہاں ٹیم نے 2 بڑے مورنگ تاجروں کے گھروں میں دبش دی ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ رمیش مشرا اور ستيہ دیو ديكشت شہر کے بڑے مورنگ ٹریڈرہیں۔ اس دوران ٹیم نے بستر اور سوفے کو کھول کر تحقیقات کی جا رہی ہے۔ سی بی آئی کی 15 رکنی ٹیم کارروائی میں لگی ہوئی ہے۔

 


بتا دیں کہ اکھلیش یادو کی حکومت میں بي چندركلا آئی اے ایس کی پوسٹنگ پہلی بار ہمیر پور ضلع میں ضلع مجسٹریٹ کے عہدے پر کی گئی تھی۔ الزام ہے کہ اس آئی اے ایس نے جولائی 2012 کے بعد ہمیر پور ضلع میں 50 مورنگ کی کان کنی کی لیز کئے تھے۔ جبکہ ای ٹینڈر کے ذریعے مورنگ کے پٹوں پر قبولیت دینے کا قانون تھا لیکن بي چندركلا نے سارے دفعات کو نظر انداز کی تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *