بی جے پی جو کہتی ہے وہ کرتی بھی ہے: راج ناتھ سنگھ

 

وزیر دفاع اور سینئر بی جے پی لیڈر راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ بی جے پی جو کہتی ہے وہ کرتی بھی ہے۔ ہمارا قول اور فعل ایک ہے۔ راج ناتھ سنگھ جمعرات کو لٹی پاڑا اسمبلی حلقہ کے ہرن پور فٹ بال میدان میں انتخابی ریلی سے خطاب کر رہے تھے۔

اس موقع پر لٹی پاڑا کے بی جے پی امیدوار دانیل کسکواور پاکوڑکے امیدوار بینی پرساد گپتا کے لئے انہوں نے لوگوں سے ووٹ ڈالنے کی اپیل کی۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں واجپئی جی سے لے کر نریندر مودی کی حکومت ہو یا ریاست میں رگھوور داس کی حکومت، آج تک کسی بھی حکومت کے دامن پر کرپشن کا ایک بھی داغ نہیں لگا جبکہ کانگریس سمیت دیگر جماعتوں کی حکومتوں نے تو بدعنوانی کا ریکارڈ ہی بنایا ہے۔

راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ حکومت تو وہ ہوتی ہے جو عوام کی بنیادی سہولیات کو پورا کرے، جیساکہ مودی جی اور رگھوورداس کی حکومتوں نے کیا ہے۔ مودی جی نے آتے ہی ملک کے غریبوں کے لئے پردھان منتری آواس، بیت الخلائ، گیس چولہا-سلنڈر کے ساتھ ہی بجلی، آیشمان بھارت جیسی اسکیموں کے ذریعے عام عوام کی بنیادی ضروریات کو پورا کیا، جو آج بھی جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنہیں ان منصوبوں کا فائدہ نہیں مل پایا ہے، انہیں بھی 2022 تک مل جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ بھارتیہ جن سنگھ پارٹی کے وقت لوگ ہمارے ایک ودھان ، ایک پردھان اور ایک نشان کے نعرے کا مذاق اڑاتے تھے، لیکن مکمل اکثریت میں آتے ہی جموں و کشمیر میں اس کا اطلاق کر ثابت کر دیا کہ ہم جو کہتے ہیں وہ کرتے بھی ہیں۔ ہماری ہی حکومت نے رام جنم بھومی تنازعہ ختم کرایا۔ اب ایودھیا میں عالیشان رام مندر بننے سے کوئی روک نہیں سکتا۔ اس کے علاوہ انہوں نے پاکستان کی اکڑ ٹھکانے لگانے کے لئے کی گئی کامیاب ایئر اسٹرائک سے لے کرسی اے بی نافذ کرنے تک اپنی حکومت کی کامیابیاں گنائیں۔

وزیر دفاع نے الزام لگایا کہ جناح کے دباؤ میں کانگریس نے مذہب کی بنیاد پر ملک کیتقسیم کرائی تھی۔ اس کے نتیجے میں پاکستان سمیت بنگلہ دیش وغیرہ میں رہنے والے مذہبی اقلیتوں کو مذہبی ظلم و ستم سے بچانے کے لئے سی اے بی لاگو کیا گیا ہے۔ اب ہماری حکومت جلد ہی این آر سی بھی نافذ کرے گی۔ اس کے علاوہ انہوں نے ملک کے کسانوں کو مالی مدد دینے کا بھی ذکر کیا۔ جلسے کو بی جے پی کی ریاستی ترجمان مشفقہ حسن، پارٹی کے سنتھال پرگنہ انچارج رمیش ہانسدا وغیرہ نے بھی خطاب کیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *