رام مندر پر فیصلے کے پیش نظر انتظامیہ الرٹ، آٹھ عارضی جیل بنیں

Share Article

 

اجودھیا میں رام مندر پر سپریم کورٹ کے ذریعہ دیے جانے والے فیصلے کے پیش نظر ضلع انتظامیہ مکمل طورپر محتاط ہو گیا ہے۔ انتظامیہ نے ہر ممکنہ حالات کو ذہن میں رکھتے ہوئے تیاریاں مکمل کر لی ہیں۔ اسی کے تحت ضلع بھر میں آٹھ اسکولوں کو عارضی جیل بنا دیا گیا ہے۔

پولیس سپرنٹنڈنٹ ویریندر کمار مشرا کے خط پر ضلع اسکول انسپکٹر نے جیل میں تبدیل شدہ اسکولوں کی فہرست جاری کی۔ ڈاکٹر جی کے جیٹلی انٹر کالج شہزادپور،کبر پور، بی این کے بی انٹر کالج اکبر پور، ڈاکٹر اشوک میموریل ڈگری کالج اکبر پور، ٹی این ڈگری کالج ٹانڈہ ، این ڈی انٹر کالج جلال پور، جنتا انٹر کالج نیوادہ، اجے پرتاپ انٹر کالج بھیٹی اور ایس این انٹر کالج اندئی پور کو عارضی جیل بنایا گیا ہے ۔

پولیس سپرنٹنڈنٹ نے بتایا کہ پورے ضلع کو 17 سیکٹر اور پانچ زون میں تقسیم کیا گیا ہے۔ ضلع میں 12 بیریر بنائے گئے ہیں جن میں سے تین اجودھیا کو جوڑنے والے راستوں پر ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ دیگر ضلع میں داخل ہونے والے راستوں پر ہیں۔ اجودھیا کا نزدیکی ضلع ہونے کی وجہسے یہاںخاص احتیاط برتی جارہی ہے۔

ایڈیشنل پولیس سپرنٹنڈنٹ اونیش کمار مشرا نے بتایا کہ ضلع میں پانچ لوگ دہشت گردانہ سرگرمیوں میں ملوث رہے ہیں۔ ساتھ ہی تین افراد سیمی سے متعلق ہیں۔ فی الحال یہ تمام فرار ہیں۔ پھر بھی ان کی سرگرمیوں کی نگرانی کی جا رہی ہے۔ 228 فرقہ وارانہ لوگوں کی نشاندہی کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ فرقہ وارانہ تنازعہ کرنے والے دونوں فریقوں کے لوگوںکی بھی نشاندہی کر انہیں پابند کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ضرورت پڑنے پر ضلع کی حدودسیل بھی کی جا سکتی ہیں۔ ضلع میں کافی پولیس فورس دستیاب ہے۔ ضرورت پڑنے پر نیم فوجی دستہ بھی دستیاب ہوگا۔ انہوں نے لوگوں سے افواہوں سے ہوشیار رہنے کی اپیل کی۔ وہاٹس ایپ گروپ پر بھی خاص نظر رکھنے کی ہدایت دی گئی ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *