ایک کروڑپرانے نوٹوں کے ساتھ 10افرادگرفتار

Share Article
currency
ملک میں نوٹ بندی کا تقریباً ڈیڑھ سال سے زیادہ کاوقت ہوگیاہے۔ملک میں 1000اور500کے پرانے نوٹ بدلنے کی ساری تاریخیں ختم ہوچکی ہیں، لیکن چوردروازے سے یہ گورکھدھندہ جاری ہے۔غازی آبادپولس نے ایسے ہی گینگ کے 10افرادکوگرفتارکرکے قریب ایک کروڑروپے کی پرانی کرنسی برآمدکی ہے۔یہ روپے دوکاروں سے نیپال لے جارہے تھے تاکہ وہاں انہیں بدلاجاسکے۔ ایس ایس پی ویبھوکرشن کے مطابق، پولس کوسمواررات مخبرسے اطلاع ملی تھی کہ کچھ لوگ دوکاروں میں بڑی تعدادمیں پرانی کرنسی لیکرجارہے ہیں۔ کوی نگرتھانہ انچار پردیپ ترپاٹھی کی قیادت میں کام کررہی ٹیم نے پوجاکٹ کے پاس سے ان دونوں کاروں پکڑا۔دونوں گاڑیاں تھوڑی دیرکے فرق سے آئی تھیں۔گرفتار ملزموں میں غازی آبادباشندے پنٹو، راہل کمار، میرٹھ کے رہنے والے راہل شرما، کاوے ، سچن ، متھرارہائشی دیپک، دہلی کے گوروگرگ، اوتارسنگھ، ارون گپتا اورپلول کے راجیش ہیں۔اوتارڈرائیور،جبکہ باقی انشورنس ایجنٹ ہیں۔
خبروں کے مطابق، ملزموں نے پوچھتاچھ میں بتایاکہ یہ روپے انہیں گریٹرنوئیڈاکے انل دکشت اورآگرہ کے مسٹریادونامی کے شخص کے ذریعے سے ملے تھے۔پولس دونوں ناموں کی پہچان اورتلاش میں لگ گئی ہے۔اس معاملے میں انل دکشت سے رابطے میں رہنے والے ارون نے بتایاکہ ان روپیوں کے بدلے انہیں 10لاکھ روپے ملنے تھے۔پرانے نوٹ پہنچانے کے بعدہی یہ رقم ملتی ۔

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *