الیکشن کا نشہ سرچڑھ کر بولے

Share Article

modi-rahul
ریاستی انتخابات کا پارہ چڑھا ہواہے۔ بلکہ یوں کہا جائے کہ اس وقت تمام سیاسی لیڈروں پر انتخابات کا نشہ چڑھا ہوا ہے تو غلط نہ ہوگا۔ دو بڑی پارٹیاں بی جے پی اور کانگریس آپس میں ایک دوسرے کو نیچا دکھانے میں لگی ہوئی ہیں۔ ایک طرف وزیراعظم مودی ہیں تو دوسری طرف کانگریس صدر راہل گاندھی ہیں۔الزام تراشیوں کا بازار گرم ہے۔ اس کی مثال وزیر اعظم مودی کے میزورم میں تو راہل گاندھی کے مدھیہ پردیش میں دیئے گئے خطاب سے دی جاسکتی ہے۔
وزیر اعظم مودی نے میزورم میں ایک جلسہ کو خطاب کرتے ہوئے کانگریس سرکار کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ اس کی غلط پالیسی کی وجہ سے میزورم کی ترقی رکی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرکار اپنے لوگوں کے لئے منصوبہ بناتی ہے۔ ریاستی سرکار کے چھوٹے چھوٹے ٹھیکوں میں بھی کانگریس کھیل کرتی ہے۔ انہوں نے کانگریس پر مرکز سے بھیجے گئے بجٹ کا صحیح استعمال نہ کرنے کا بھی الزام لگایا ۔
وزیر اعظم مودی نے کہا کہ میزورم کی ترقی کے لئے مرکز سے 250 کروڑ روپے بھیجے گئے جن میں سے تقریباً سواسو کروڑ روپے کا استعمال ہی ریاستی سرکار نے کیا۔ مودی نے ریاست کی کانگریس سرکار پر وزیر اعظم رہائشی اسکیم میں بھی مدد نہ کرنے کا الزام لگایا۔ اپنے خطاب کے دوران وزیر اعظم مودی پوری طرح سے کانگریس پر حملہ آور رہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی شمال مشرقی ریاستوں کی ترقی کے لئے پرعزم ہے۔ یہاں کی ترقی کے لئے ہمارا ایجنڈا ’ ٹرانسفارمیشن تھرو ٹرانسپورٹیشن ‘ ہے۔
دوسری طرف کانگریس صدر راہل گاندھی نے مرکز میں حکمراں بی جے پی حکومت کو جھوٹے اعلانات کی سرکار قرار دیتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی حکومت ملک کے عوام سے کئے گئے کسی بھی وعدے کو پورا کرنے میں ناکام رہی ہے۔
راہل گاندھی نے مدھیہ پردیش کے خلع وویشا میں پارٹی امیدوار کی حمایت میں ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مرکز کی مودی حکومت پر جم کر حملہ کیا اور کہا کہ گزشتہ ساڑھے چار برسوں میں مرکزی حکومت ہر محاذ پر ناکام رہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ گزشتہ لوگ سبھا انتخابی مہم کے دوران نریندر مودی نے روزگار ، کسان اور بدعنوانی کے تعلق سے ملک کے لوگوں سے بڑے بڑے وعدے کئے تھے لیکن ان میں سے کسی کو پورا نہیں کیا گیا۔ کانگریس صدر نے کہا کہ مودی نے ملک کے نوجوانوں سے سالانہ دو کروڑ روزگار دینے کا وعدہ کیا تھا۔ملک کانوجوان آج ڈگریاں لے کر گھوم رہا ہے لیکن اسے کہیں بھی روزگار نہیں مل رہا ہے۔ مودی حکومت میں نوجوانوں کو کسی بھی اسکیم کا فائدہ نہیں ملا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *