سر سید احمد خاں کی تصویر اتارے جانے کی حرکت ایک سوچی سمجھی سازش : سریندر کمار آزاد

Share Article
Sir-Sayed
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے سامپردائکتا ورودھی مورچہ اتر پردیش کی ایک خصوصی میٹنگ مسٹر یوسف جمال کی صدارت میں منعقد ہوئی جس میں اس امر پر تشویش کا اظہار کیا گیا کہ چند فرقہ پرست طاقتیں تسلسل کے ساتھ ہندو مسلم بھائی چارے کو نقصان پہنچانے کی مذموم کوششیں کر رہی ہیں۔مورچہ کے صدر مسٹر سریندر کمار آزاد نے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے بانی سر سید احمد خاں کی تصویر اتارے جانے کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ حرکت ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت عمل میں لائی گئی۔ انہوں نے کہا کہ چند سر پھرے لوگ شہر کی فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو نقصان پہنچا کر ضلع انتظامیہ کی امن کی کوششوں کو چیلنج کر رہے ہیں۔
مورچہ نے ضلع انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری طور پر اس امر کی جانچ کراکر سرسید احمد خاں کی تصویر اتارنے والوں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائے۔میٹنگ میں مسٹر کشن چندریل، رام گوپال رینا، شیام بابو، ریحان احمد، اکبر علی، ونود راہی، یوگیش یادو، سریش پال، محمد دانش، عبدالشکور، سریش ماتھر، نتن کمار، ہیمراج، لال محمد، بندو خاں، رحمت علی، سنتوش بالمیکی وغیرہ خصوصی طور پر موجود تھے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *