ہادیہ نے اپنی مرضی سے شادی کی ہے،این آئی اے کوجانچ کاحق نہیں:سپریم کورٹ

Share Article
hadiya-shafin
کیرل ’لوجہاد‘معاملے میں آج سپریم کورٹ میں سنوائی ہوئی۔چیف جسٹس دیپک مشراکی قیادت والی بنچ نے کہاکہ ہادیہ بالغ ہے، جب اپنی مرضی سے شادی کی ہے، این آئی اے شادی کی جانچ نہیں کرسکتی ہے۔کیرل لوجہاد معاملے میں سپریم کورٹ نے کہاکہ ہادیہ اپنی مرضی سے شادی کی بات کہہ رہی ہے۔ایسے میں کورٹ اس شادی کوکیسے غیرقانونی ٹھہراسکتی ہے؟۔ عدالت نے کہاکہ اگرہادیہ کوکوئی پریشانی نہیں ہے توپھریہ معاملہ ہی ختم ہے۔جہاں تک لڑکے کے کرمنل بیک گراؤنڈ کی بات ہے تواس کی جانچ ہوسکتی ہے۔لیکن شادی کی جانچ کاحق کسی کونہیں نہیں ہے۔سپریم کورٹ نے کہاکہ یہ شادی تنازعہ کے گھیرے سے باہرہے،ہادیہ بالغ ہے۔اس پرتونہ فریقین کوسوال اٹھانے کا حق ہے اورنہ کسی عدالت یاجانچ ایجنسی کو۔اس طرح اس شادی کی جانچ این آئی اے نہیں کرسکتی ۔عیاں رہے کہ اس معاملے کی سنوائی چیف جسٹس دیپک مشراکی قیادت تین رکنی بنچ کررہی ہے۔اس پراب اگلی سنوائی 22فروری کوہوگی۔
ہادیہ کے والداشوک کے وکیل اے رگھوناتھ نے کہاکہ ہم امیدکرتے ہیں کہ این آئی اے اپنی رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش کرے گی۔عدالت ہادیہ کوپڑھائی جاری رکھنے کی اجازت دے گی۔ ہم خوش ہیں کہ ہادیہ محفوظ ہے۔وہیں این آئی اے اس معاملے میں چوتھی اسٹیٹس رپورٹ داخل کرنے جارہی ہے۔الزام ہے کہ ہادیہ کاشوہرآئی ایس آئی ایس کے رابطے میں تھا۔

 

یہ بھی پڑھیں  شرپسند عناصر کی فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی فضا خراب کرنے کی کوشش
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *