آسام میں این آر سی کا عمل مکمل کرنے کی تاریخ بڑھانے سے سپریم کورٹ کا انکار

Share Article

 

سپریم کورٹ نے آج پھر آسام میںاین آرسی کاعمل مکمل کرنے کی تاریخ 31 جولائی سے آگے بڑھانے سے انکار کر دیا ہے۔ سپریم کورٹ نے این آرسی کے کوآرڈی نیٹر پرتیک ہجیلا سے کہا کہ آپ 31 جولائی سے ایک دن پہلے یہ کام مکمل کریں لیکن ایک دن دیر سے نہیں۔ معاملے کی اگلی سماعت 3 جولائی کو ہوگی۔

Image result for Supreme Court refuses to increase the history of completing the NCR process in Assam

سماعت کے دوران پرتیک ہجیلا کی جانب سے کہا گیا کہ اعتراضات پر سماعت 6 مئی سے شروع ہوئی ہے۔ بہت سے معاملات میں اعتراض درج کرانے والے شرکت نہیں کر رہے ہیں۔ تب چیف جسٹس نے کہا کہ اگر وہ نہیں موجود ہو رہے ہیں تو قانون اپنا کام کرے گا۔ آپ اپنے حق کا استعمال کیجیے اور شرکت نہیں ہونے والوں کے معاملات پر قانون کے مطابق کام کیجیے۔

 

Image result for Supreme Court refuses to increase the history of completing the NCR process in Assam

اس سے قبل سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے لوک سبھا انتخابات کے دوران وہاں تعینات مرکزی دستہ کو ہٹانے کی مرکزی حکومت کی عرضی مسترد کر دی تھی۔ کورٹ نے ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا تھا کہ لگتا ہے کہ وزارت داخلہ این آرسی کو پورا کرنے میں دل سے تعاون نہیں کرنا چاہتی۔سماعت کے دوران مرکزی حکومت نے این آرسی کے عمل میں لگی 167 آرمڈ فورس کی کمپنیوں کو وہاں سے ہٹا کر انتخابی عمل میں لگانے کی مانگ کی تھی، جس پر سپریم کورٹ نے کہا تھا کہ انتخابات اور این آرسی دونوں اہم ہیں۔ کسی کام کو روکا نہیں جا سکتا ہے۔گزشتہ 24 جنوری کو عدالت نے این آرسی کی اشاعت 31 جولائی تک کرنے کی ہدایت دی تھی۔ کورٹ نے لوک سبھا انتخابات کے پیش نظر وقت کی حد بڑھانے سے انکار کر دیا تھا۔عدالت نے کہا تھا کہ آسام حکومت، این آرسی اور الیکشن کمیشن یہ یقینی بنائیں کہ شہری رجسٹر طے وقت میں مکمل ہو۔

 

Image result for Supreme Court refuses to increase the history of completing the NCR process in Assam

سماعت کے دوران عدالت نے کہا تھا کہ الیکشن کمیشن کے سیکریٹری، آسام حکومت کے سیکریٹری اور آسام این آرسی کے کوآرڈی نیٹر کے درمیان ایک اجلاس ہونا چاہئے تاکہ عام انتخابات کی وجہ سے این آرسی کے عمل میں رکاوٹ نہ آئے۔ این آرسی کے کوآرڈینیٹرپرتیک ہجیلا نے عدالت کو بتایا تھا کہ دعوے اور اعتراضات کا عمل 31 دسمبر تک مکمل کر لیا گیا ہے۔ اس دوران 36.2 لاکھ دعوے اور 2 لاکھ سے زیادہ اعتراضات آئے ہیں۔

 

Image result for Supreme Court refuses to increase the history of completing the NCR process in Assam

12 دسمبر 2018 کو سپریم کورٹ نے این آرسی ڈرافٹ میں جگہ نہ پا سکے 40 لاکھ لوگوں کو دعوے اور اعتراض دائر کرنے کے لئے وقت کی حد 31 دسمبر تک بڑھائی تھی۔ پہلے یہ وقت کی حد 15 دسمبر تک تھی۔یکم نومبر 2018 کو عدالت نے دعوے اور اعتراضات درج کرنے کے لئے 15 دسمبر تک وقت دیا تھا۔ اس سے پہلے یہ میعاد 25 نومبر تھی۔ سپریم کورٹ نے لوگوں کو شہریت ثابت کرنے کے لئے 5 اور دستاویزات کے استعمال کی اجازت دی تھی۔ پہلے صرف 10 دستاویزات کو تسلیم کیا گیاتھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *