ایس آئی ٹی کا دعویٰ – مساج پر بلانے کی غلطی چنمياند نے قبول کی، کہا شرمندہ ہوں

Share Article

شاہ جہاں پور جنسی استحصال کیس میں گرفتار سابق مرکزی وزیر سوامی چنمياند نے اپنی غلطی تسلیم کر لی ہے۔ معاملے کی تحقیقات کر رہی اسپیشل انویسٹی گیشن ٹیم (ایس آئی ٹی) کا دعوی ہے کہ چنمياند نے متاثرہ لڑکی کو مساج کے لئے بلانے میں اپنی غلطی تسلیم کی ہے۔

شاہ جہاں پور جنسی استحصال کیس میں گرفتار سابق مرکزی وزیر سوامی چنمياند نے اپنی غلطی تسلیم کر لی ہے۔ معاملے کی تحقیقات کر رہی اسپیشل انویسٹی گیشن ٹیم (ایس آئی ٹی) کا دعوی ہے کہ چنمياند نے متاثرہ لڑکی کو مساج کے لئے بلانے میں اپنی غلطی تسلیم کی ہے۔

اسپیشل انویسٹی گیشن کے سربراہ نوین ارورہ نے کہا کہ سوامی چنمياند نے اپنے خلاف لگے تقریبا تمام الزامات کو قبول کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس بارے میں زیادہ کچھ نہیں کہنا چاہتے کیونکہ وہ اپنے ان اعمال سے شرمندہ ہیں۔

بتا دیں کہ اسکول کے جنسی تشدد کیس میں گرفتار سوامی چنمياند کو جمعہ کو عدالت نے 14 دن کی عدالتی حراست پر جیل بھیج دیا ہے۔ ساتھ ہی ان کے تین ساتھی نوجوانوں کو بھی ایس آئی ٹی نے گرفتار کیا ہے۔ پھنسے تینوں نوجوانوں پر بلیک میلنگ میں شامل ہونے کا الزام ہے۔

ایس آئی ٹی کے ذرائع کے مطابق، گرفتار تینوں نوجوانوں کو بھی چنمياند کے ساتھ ہی مقامی سی جی ایم عدالت میں پیش کیا گیا۔ ایس آئی ٹی کا کہنا ہے کہ اس پورے معاملے میں سوامی کے ساتھ تینوں ہی نوجوانوں کی خاص کردار رہی تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *