پاکستان میں گناہ ٹیکس 

Share Article

پاکستان میں ابْ پھونکنا گناہ گیا ہے۔اس کی وجہ یہ ہے کہ وزیرِ صحت نے دو روز قبل ہی عندیہ دیا کہ حکومت اب سگریٹ اور سافٹ ڈرنکس پر اضافی ٹیکس لگائے گی جس کا نام’ سِن ٹیکس ‘ یعنی گناہ ٹیکس ہوگا۔

 

وزیر صحت کا یہ اعلان پاکستان کے بازاروں میں خاصا گرم ہے۔اسلام آباد ہی کی ایک جامعہ میں ایک طالب علم نے کہا کہ’سگریٹ نوشی گناہ ہی ہے تو اس پر مکمل پابندی لگا دیں، یہ کیا کہ گناہ ہے مگر ٹیکس دے کر کر لیں یہ گناہ، کیا ٹیکس دینے کے بعد یہ گناہ گناہ نہیں رہے گا‘۔کچھ نوجوانوں نے سگریٹ کو ‘تھوڑا سا گناہ‘ مان بھی لیا مگر سافٹ ڈرنکس پی کر بھی گناہگار؟ یہ بات اْن کے لیے سمجھ سے بالاتر ہے۔
یہاں یہ بتانا ضروری ہے کہ ’سِن ٹیکس‘ کی یہ اصطلاح پی ٹی آئی نے نہیں بنائی، بلکہ یہ بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ اصطلاح ہے جو شراب سمیت مضرِ صحت مصنوعات، پورنوگرافی اور سٹے بازی کے لیے استعمال کی جاتی ہے۔
اس قسم کے ٹیکسز امریکہ اور برطانیہ سمیت دنیا کے کئی ممالک میں رائج ہیں، یہاں تک کہ عالمی ادارہ صحت نے فلپائن میں 2012 میں سگریٹ پر نافذ کیے گئے ’سِن ٹیکس‘ کو انتہائی کامیاب قرار دیا کیونکہ اِس ٹیکس کی مد میں حاصل ہونے والی رقم سے غریب شہریوں کو صحت کی بہتر سہولیات فراہم کرنے میں مدد ملی۔ جبکہ عرب ممالک میں یو اے ای اور سعودی عرب میں بھی مختلف مصنوعات پر سِن ٹیکس نافذ ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *