امریکہ میں سکھ پولیس افسر کاگولی مار کر قتل

Share Article

امریکہ میں پہلے سکھ پولیس افسر سندیپ کا جمعہ کے روز ہیوسٹن کے شمال مغربی ہیرس کاؤنٹی میں گولی مار کر قتل کر دیا گیا۔ وہ 10 سال سے ہیرس کاؤنٹی شیرف دفتر میں تعینات تھے۔

شیرف ایڈ گونزالیز نے پریس کانفرنس میں اس کی تصدیق کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سندیپ کے تین بچے ہیں۔ وہ پگڑی پہنتے تھے۔ انہوں نے اپنی کمیونٹی کی نمائندگی ایمانداری، احترام اور فخر کے ساتھ کی۔ سندیپ ٹریفک شاپ کوآپریٹ کرتے تھے۔ انہوں نے بتایا کہ جمعہ کے روز دو لوگ گاڑی سے پہنچے۔ سندیپ اپنیپٹرول کار کی طرف بڑھ رہے تھے۔ اس دوران انہیں پیچھے سے پستول سے گولی مار دی گئی۔ دونوں کو حراست میں لیا گیا ہے۔ ہیرس کاؤنٹی کے پولیس کمشنر ایڈرین گارسیا نے کہا ہے کہ سندیپ کا سونے جیسا دل تھا۔ وہ لاء انفورسمنٹ میں لوگوں کے ساتھ بھائی بہنوں کی طرح برتاؤ کرتے تھے۔ وہ اپنے بارے میں کم اور اپنی کمیونٹی کے بارے میں زیادہ سوچتے تھے۔ ٹیکساس کے گورنر گریگ ایبٹ نے کہا ہے کہ یہ ایک دردناک واقعہ ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *