کیرل میں یوتھ کانگریس کے دو کارکنان کا قتل، سی پی ایم پر الزام

Share Article
Keral-Youth-COngress-
کیرالہ: کیرالہ کے کاسرگوڈ میں اتوار کی شب نامعلوم حملہ آوروں نییوا کانگریس کے دو کارکنوں کا مبینہ طور پر قتل کر دیا۔پولیس کے سینئر افسر نے بتایا کہ یہ واردات رات تقریباً آٹھ بجے ہوئی اور مرنے والوں کی شناخت کرپیش اور سارت لال (24) کے طور پر ہوئی ہے۔ پولیس نے بتایا کہ مقدمہ درج کر لیا گیا ہے اور تفتیش جاری ہے۔
کانگریس لیڈر رمیش چینتھلا نے حکمراں پارٹی سی پی ایم پر نشانہ سادھتے ہوئے یہ ڈبل قتل کے خلاف اپنا احتجاج درج کرایا۔ انہوں نے الزام لگایا کہ عام انتخابات قریب آنے کی وجہ سے یہ قتل سی پی ایم کے ذریعہ رچی گئی سازش ہے، حالانکہ سی پی ایم کے ضلع سیکرٹری ایم وی بالا کرشن ماسٹر نے ان قتل میں ان کی پارٹی کے کسی بھی طرح کے کردار کو پورے طور پر مسترد کیا ہے۔ انہوں نے صحافیوں سے کہا، ہم اس قتل کی سخت مذمت کرتے ہیں، اس میں ہمارا کوئی رول نہیں ہے۔ پولیس نے بتایا کہ حملہ آوروں کی ابھی شناخت نہیں ہو پائی ہے۔
افسر نے بتایا کہ یہ واقعہ رات تقریباً آٹھ بجے ہوا اور مرنے والوں کی شناخت کرپیش اور سارت لال (24) کے طور پر ہوئی ہے۔
پولیس نے بتایا، ’ دو نوجوانوں کا قتل کر دیا گیا، ہم مرنے والوں کی شناخت کی ابھی تصدیق کر رہے ہیں، تفتیش جاری ہے۔‘
کیرل میں پہلے بھی کئی بار پارٹی کارکنوں کے قتل کی خبریں سامنے آئی ہیں۔گزشتہ سال مئی میں کنّور کے پاس کچھ گھنٹوں کے وقفے پر ہوئے الگ الگ واقعات میں سی پی ایم اور بی جے پی کے ایک ایک کارکن کا قتل کر دیا گیا تھا۔ ماہے کے پلور علاقے میں سی پی ایم لیڈر اور ماہے کے سابق شہر کونسلر بابو (42) کا بے رحمیسے قتل کر دیا گیا تھا۔ آٹھ لوگوں کے ایک گروپ نے پہلے ان کا پیچھا کیا اور پھر ان پر حملہ کیا۔ حملہ آوروں کے آر ایس ایس اور بی جے پی ?کارکنان ہونے کی بات کہی جا رہی ہے۔ بابو شدید طور پر زخمی ہو گئے اور اسپتال لے جاتے وقت انہوں نے دم توڑ دیا۔ اس کے بعد صاف طور پر بدلے کی ایک کارروائی میں نیو ماہے میں راشٹریہ سویم سیوک سنگھ کے ایک کارکن کا مبینہ طور پر قتل کر دیا گیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *