بہار : این ڈی اے کے لیڈران سے کیا ہوئی غلطی کہ پرشانت کشور کو معافی مانگنی پڑی

Share Article
bihar-soldiers

پٹنہ: دہشت گردوں سے لوہا لیتے ہوئے کپواڑہ تصادم میں سی آر پی ایف جوان پنٹو سنگھ شہید ہو گئے تھے۔ پنٹو سنگھ بہار کے رہنے والے تھے لیکن اتوار کو جب ان کی جسد خاکی پٹنہ پہنچی انہیں لینے تو دور خراج عقیدت تک دینے حکمران اتحاد کا کوئی لیڈر نہیں پہنچا،حالانکہ طالب علم رہنما کنہیا کمار ان کی آخری رسومات میں شامل ہوئے۔

bihar-soldiers-1
جب اس پر سوال پوچھا جانے لگا تو این ڈی اے کے تمام لیڈر خاموشی اختیار کر گئے، مگر اب جنتا دل یو (جے ڈی یو) نائب صدر پرشانت کشور کی طرف سے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے غلطی مانی ہے۔ کشور نے کہا کہ ان کی پارٹی کے کسی رکن کو اس دکھ کی گھڑی میں پنٹوسنگھ کے پریوار کے ساتھ ہونا چاہیے تھا۔ پرشانت نے ٹویٹ کیا، ’’ہم اس بھول چوک کی معافی چاہتے ہیں، ہمیں اس دکھ کی گھڑی میں آپ کے ساتھ ہونا چاہیے تھا۔‘‘انہوں نے شہید جوان کے بھائی کا ویڈیو شیئر کرتے ہوئے یہ بات کہی۔

دراصل، ایک ویڈیو سامنے آیا تھا جس میں شہید پنٹو سنگھ کے بھائی نے میڈیا سے کہا تھا کہ ’ریلی کو اہمیت دی گئی ہے، شہید کو تو بعد میں بھی دیکھا جا سکتا ہے۔ مرنے والا تو مر گیا۔ منتری جی کو کیا لینا ہے،وہ اپنی کرسی بچا رہے ہیں، اسی سے پتہ چلتا ہے کہ ہماری حکومت فوج کی کتنی مدد کر رہی ہے۔‘

جبکہ ایک طرف پٹنہ ایئرپورٹ پر جب شہید کی جسد خاکی لائی گئی تھی، اسی وقت پٹنہ کے گاندھی میدان میں جے ڈی یو اور بی جے پی کی مشترکہ ریلی چل رہی تھی جس میں وزیر اعظم نریندر مودی اور صوبے کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار شریک ہوئے۔ اس ریلی میں دونوں پارٹیوں کے بڑے لیڈر اور نتیش کی کابینہ کے وزیر موجود رہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *