بی جے پی کے ’شترو‘ کانگریس کے ہاتھ کے ساتھ، پٹنہ صاحب سے انتخابی جنگ میں

Share Article

shatrughan-sinha-quit-bjp-a

پٹنہ: مہاگٹھ بندھن میں سب کچھ آہستہ آہستہ لائن پر آ رہا ہے۔ کہا جا رہا ہے کی آپسی رضامندی سے معاملہ حل کیا گیا ہے۔ مہاگٹھ بندھن میں بالی ووڈ اداکار اور بی جے پی کے شترو کو لے کر بھی تصویر صاف ہو گئی ہے۔ ذرائع بتاتے ہیں کہ، بی جے پی کے ’شترو‘ کانگریس کے ہاتھ کے ساتھ پٹنہ صاحب سے الیکشن لڑیں گے۔ بی جے پی کے رہنما شتروگھن سنہا نے آج کانگریس کا دامن تھامیں گے۔

بتایا جا رہا ہے کہ، شتروگھن سنہا کو پٹنہ صاحب سے ٹکٹ نہیں دیا گیا اس سے وہ ناراض چل رہے تھے۔ اس کے بعد آج شتروگھن سنہا نے کانگریس کا دامن تھام لیا ہے۔ معلومات کے مطابق مہاگٹھ بندھن کے ٹوٹے ہوئے تار کو جوڑنے میں پٹنہ صاحب علاقے سے ممبر پارلیمنٹ شتروگھن سنہا نے بڑا کردار ادا کیا۔ ذرائع کے مطابق پٹنہ صاحب سیٹ سے ’بہاری بابو‘الیکشن لڑیں گے۔

اس سے پہلے شتروگھن سنہا نے پارٹی چھوڑنے کے اشارہ دیتے ہوئے بی جے پی اور وزیر اعظم پر جم کر حملے کئے تھے۔ انہوں نے ٹویٹ کر لکھا تھا، ’محبت کرنے والے کم نہ ہوں گے، (شاید) تیری محفل میں لیکن ہم نہ ہوں گے۔‘ انہوں نے ایک کے بعد ایک کئی ٹویٹ کئے۔ اس میں انہوں نے اشاروں ہی اشاروں میں کئی باتیں کہیں۔ ایک ٹویٹ میں انہوں نے لکھا تھا،’سر ملک آپ کا احترام کرتا ہے، مگر قیادت میں اعتماد اور بھروسہ کی کمی ہے۔‘

بہاری بابو اور بی جے پی کے رہنما گزشتہ کافی وقت سے ناراض چل رہے ہیں، جس کے بعد ہی انہوں نے پی ایم اور امت شاہ کے خلاف آواز اٹھانا شروع کر دیا تھا۔ ان کے اس آواز کو کیرتی آزاد کا بھی ساتھ خوب ملا تھا۔ کیرتی پہلے ہی کانگریسی ہو چکے ہیں۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *