جموں و کشمیر کے راجوری میں سات ماہ بعد قبر سے نکالی گئی لاش کو فوج کے حوالے کیا گیا

Share Article

 

جموں وکشمیر کے راجوری ضلع کے نوشہرہ میں منگل کے روز حکام نے سات ماہ قبل دفنائے گئے پاکستان مقبوضہ کشمیر کے ایک باشندے کی لاش کو قبر سے نکال کرفوج کے حوالے کیا۔

 

جموں وکشمیر کے راجوری ضلع کے نوشہرہ میں منگل کے روز حکام نے سات ماہ قبل دفنائے گئے پاکستان مقبوضہ کشمیر کے ایک باشندے کی لاش کو قبر سے نکال کرفوج کے حوالے کیا۔ واضح رہے کہ محمد ارشد ولد محمد شبیر ساکن کوٹلی گجراں پاکستان قبوضہ کشمیر کی لاش کو 23 جولائی 2018 کو جھانگر میں بر آمد کیا گیا تھا اور بعد ازاں اس لاش کو راجوری کے نوشہرہ میں دفن کردیا گیا تھا۔ شروعات میں لاش کی شناخت نہیں ہوئی تھی ۔ تاہم بعد میں پاکستانی فوج نے راجوری میں ہندوستانی حکام سے لاش کو لواحقین کے حوالے کرنے کی اپیل کی تھی۔ پاکستان کی طرف سے اپیل کے بعد ضلع ترقیاتی کمشنر راجوری نے پولیس کو ہدایات جاری کیں کہ لاش کو قبر سے نکال کر فوج کے حوالے کیا جائے ، تاکہ وہ اس لاش کو پاکستانی فوج کے سپرد کرسکیں ۔
ذرائع کے مطابق منگل کے روز سول اور پولیس کے عہدیداروں بشمول تحصیلدار، ایڈیشنل ایس پی نوشہرہ، متعلقہ ایس ایچ او اور ڈاکٹروں کی موجودگی میں لاش کو قبر سے نکا لا گیا۔

 

Image result for dead body in qabar

انہوں نے بتایا کہ لاش کو قبر سے نکالنے کے بعد فوجی حکام کے حوالے کیا گیا ۔ تاکہ وہ اس کو پاکستانی فوجی حکام کے سپرد کرکے چکن دا باغ کراسنگ کے ذریعے آبائی گاؤں پہنچاسکیں ۔ انہوں نے کہا کہ 22 اور 23 جولائی کی درمیانی شب کو محمد ارشد کی نوشہرہ سیکٹر میں لائن آف کنٹرول پر بجلی کی کرنٹ لگنے سے موت واقع ہوئی تھی اور اگلے روز اس کی لاش کو کمپالہ موہرہ میں دفن کیا گیا تھا اور ایک کیس بھی درج کیا گیا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *