article35a
جموں و کشمیر کوخصوصی ریاست کا درجہ دینے والی دفعہ 35 اے کے خلاف سپریم کورٹ میں دائر عرضیوں پر آج سماعت ہونی تھی۔جس کے خلاف حریت لیڈروں نے بندکا اعلان کیاہے۔لیکن اب سپریم کورٹ میں دفعہ 35اے پرسنوائی 27اگست تک کیلئے ملتوی کردی گئی ہے۔یہ عرضی پچھلے چارسال سے پینڈنگ میں ہے۔2014میں دفعہ 35اے کولیکرقانونی جنگ سپریم کورٹ تک پہنچ گئی تھی۔لیکن پچھلے چارسال میں اس پرصرف بات ہی ہوئی ہے۔خیال رہے کہ سال 1954 میں صدر جمہوریہ کے حکم سے آئین میں جوڑی گئی دفعہ 35 اے جموں و کشمیر کے مقامی لوگوں کو خصوصی درجہ دیتی ہے اور اس کے تحت ہندوستانی شہریوں کو کشمیر میں زمینیں خریدنے، سرکاری نوکریاں حاصل کرنے، ووٹ ڈالنے اور دوسری سرکاری مراعات کا قانونی حق نہیں ہے۔بہرکیف جموں وکشمیربندکے سبب اتوار کے روز جموں سے امرناتھ یاترا دو دنوں کے لئے معطل کر دی گئی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here