ووٹ ڈالنے کے بعد پی ایم مودی بولے-دہشت گردی کاہتھیار آئی ای ڈی ہے اورجمہوریت کی طاقت ووٹرآئی ڈی

Share Article

modi

لوک سبھا انتخابات کے تیسرے مرحلے کیلئے منگل کو صبح سات بجے پولنگ شروع ہو گئی۔ لوک سبھا انتخابات کے تیسرے مرحلے میں منگل کو 13 ریاستوں اور دو مرکز کے زیر انتظام ریاستوں کی 117 سیٹوں پر ووٹنگ جاری ہے۔ آج کے انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی صدر (بی جے پی) امت شاہ، کانگریس صدر راہل گاندھی اور سماج وادی پارٹی کے سینئر لیڈر ملائم سنگھ یادو سمیت کئی سابق لیڈروں کی قسمت داؤ پر ہے۔ لوک سبھا انتخابات کے تیسرے مرحلے میں پی ایم مودی ووٹ ڈالنے کے لئے احمد آباد پہنچے۔ گاندھی نگر میں اپنی ماں سے ملنے کے بعد پی ایم مودی نے احمد آباد کے نشان اسکول کے پولنگ بوتھ پر اپنا ووٹ ڈالا۔ اس کے بعد انہوں نے صحافیوں کو خطاب کیا اور ووٹروں سے ووٹ ڈالنے کی اپیل کی۔

اس دوران پی ایم مودی نے کہا کہ دہشت گردی کا ہتھیار آئی ای ڈی ہے اور جمہوریت کی طاقت ووٹرآئی ڈی ۔ انہوں نے ووٹنگ کی اہمیت کو سمجھاتے ہوئے کہا کہ ووٹر شناختی کارڈ نہ صرف دہشت گردی کے اسلحہ آئی ای ڈی سے زیادہ طاقتور ہے، بلکہ اس کی اہمیت بھی زیادہ ہے۔انہوں نے نوجوان ووٹروں سے اپیل کی کہ وہ زیادہ سے زیادہ تعداد میں ووٹ ڈالیں کیونکہ یہ صدی ان کی ہے۔

قابل ذکرہے کہ ووٹنگ سے پہلے وزیر اعظم مودی نے اپنی ماں سے ملاقات کر کے ان کا آشیرواد لیا۔ اس کے بعد وہ گاندھی نگر کے پولنگ بوتھ پر اپنا ووٹ ڈالنے پہنچے۔ ووٹ ڈالنے کے بعد وزیر اعظم نے کہا کہ دہشت گردی کا ہتھیار آئی ای ڈی ہے جبکہ جمہوریت کی طاقت ووٹر آئی ڈی ہے۔بہرکیف ملک بھر میں سات مراحل میں انتخابات کروائے جارہے ہیں۔عام انتخابات 2019 کے تیسرے مرحلے کے لئے ا?ج صبح 7 بجے سے ووٹنگ جاری ہے۔ لوک سبھاکی 117 سیٹوں پر ووٹنگ ہو رہی ہے اور ووٹر اس میں پورے جوش کے ساتھ حصہ لے رہے ہیں۔

 

 

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *