مسلم خواتین کے تعلق سے سادھوی پراچی کا متنازعہ بیان

Share Article
sadhvi-prachi
اپنے بیانوں سے تنازعات میں رہنے والی بی جے پی کی ہندوتولیڈر سادھوی پراچی نے ایک بارپھرمسلم خواتین کے تعلق سے متنازعہ بیان دیکر سرخیاں بٹوررہی ہیں۔ہندوتو کا پرچم لہرانے والی سادھوی پراچی نے ایک اور متنازعہ بیان دے کر سب کا دھیان اپنی جانب مرکوز کر لیا ہے۔انہو ں نے کہاہے کہ اگرمسلم خواتین طلاق ثلاثہ، نکاح حلالہ سے بچنا چاہتی ہیں تووہ اپنا مذہب چھوڑ کر ہندومذہب میں شامل ہوجائیں،انہیں شادی کیلئے بہت سے مردمل جائیں گے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق، ان کی وال پرشےئرایک ویڈویومیں انہوں نے کہاکہ مسلم مذہب میں خواتین کا احترام نہیں ہوتاہے اورانہیں نکاح حلالہ جیسے غیرانسانی مسئلوں سے گزرنا ہوتاہے، اسلئے میں تویہی کہوں گی کہ وہ اپنا مذہب چھوڑیں اورجنت جیسے ہندومذمب میں آجائیں ، یہاں ان کا احترام ہوگا۔
اتناہی نہیں ،انہو ں نے کہاکہ ایساکرکے انہیں فتویٰ جاری کرنے والوں مولویوں کے منھ پرطمانچہ مارنا چاہئے ۔ایسے مولویوں کوسزاملنی چاہئے کیونکہ وہ سماج کوگندہ کررہے ہیں۔وشو ہندو پریشد کی لیڈر سادھوی نے کہا کہ وہ بریلی کی تین طلاق متاثرہ ندا خان کے علاوہ دیگر مسلم خواتین سے ملیں گی اوران سے ہندومذہب اپنانے کی اپیل کریں گی۔واضح ہو کہ کل بھی سادھوی پراچی نے ایک متنازعہ بیان دیا تھا۔ انہوں نے کانگریس صدر راہل گاندھی پر تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں اگر 2019 میں اکثریت حاصل نہیں ہوگی تو اس سے بہتر ہے کہ وہ شادی کر لیں اوربہوگھرلے آئیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *