آر ایس ایس لیڈر نے اپنی ہی بھتیجی کو یرغمال بنا کر تین دن تک آبرو لوٹی، بچی نے ماں کو بتائی وکیل چچا کی کرتوت

Share Article

 

اتر پردیش پولیس نے ایک آر ایس ایس لیڈر اور وکیل کو اپنے ہی نابالغ رشتہ دار سے ریپ کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔ الزام ہے کی وکیل نے بچی کے ساتھ تین دن تک آبروریزی کی۔ اس دوران وہ بچی کو مسلسل خوفزدہ دھمکا رہا تھا۔ جو معلومات سامنے آئی ہے اس کے مطابق، بچی لکھنؤ کے مڑيائوں علاقے میں آپ ایک وکیل رشتہ دار کے یہاں موسم گرما میں چھٹی میں سیتاپور سے مهماني کرنے آئی تھی۔بچی نابالغ ہے اور اس کی عمر 12 سال ہے۔ بچی نے اتوار کو اپنی ماں کو فون کرکے روتے ہوئے آپ بیتی سنائی۔ پولیس نے والد کی تحریر پر ایف آئی آر درج کرکے ملزم وکیل کو گرفتار کیا ہے۔

شکار بچی نے جو ایف آئی آر درج کرائی ہے، اس میں باپ نے پولیس کو بتایا کہ ان کی بیٹی نے دوپہر تین بجے انہیں فون کرکے گھر لے جانے کو کہا۔ جب وہ اسے لینے پہنچے تو بچی نے ڈر اور لاج-شرم کی وجہ سے ملزم دھرمیندر کی کرتوت نہیں بتا سکی۔ بچی نے شام چھ بجے ماں کو فون کرکے روتے ہوئے آپ بیتی سنائی۔ اس سے تمام لوگ گھبرا گئے۔

 

جس کے بعد وہ سیتاپور سے رات دس بجے دھرمیندر کے گھر پہنچے اور بچی کو لے گئے۔ اس نے گھر پہنچ کر درندگی کی معلومات دی۔ اس پر والد اپنی بیٹی کو ساتھ لے کر پیر کی صبح مڑيائوں تھانے پہنچا۔ انچارج انسپکٹر نے بتایا کہ آبروریزی اور پكسو ایکٹ کے تحت ایف آئی آر درج کرکے انسپکٹر راجیش کمار دویدی کو رپورٹ سونپی گئی۔

بچی کو ہسپتال بھیجنے کے ساتھ پولیس ٹیم نے ملزم وکیل دھرمیندر کمار سنگھ کو گرفتار کر لیا۔ وکیل کی گرفتاری کی بھنک لگنے پر اس قریبیپیروی کرنے تھانے پہنچے، لیکن رشتہ دار کی بیٹی سے بدفعلی کا پتہ چلنے پر لوٹ گئے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *