اے ایم یوکا علاقائی ریسورس ٹریننگ سنٹر ماں و بچہ کی شرح اموات کم کرنے کے لئے کوشاں

Share Article
RRTC-training
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج و ہاسپٹل میں وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور کے ذریعہ حال ہی میں قائم کیا گیا علاقائی ریسورس ٹریننگ سنٹر (آر آر ٹی سی) علاج و معالجہ کے شعبہ کا ایک بڑا اقدام ہے، جس کا مقصد مسلسل طبی تعلیم اور اترپردیش کے صحت مراکز کے عملہ کو تربیت فراہم کرکے نوزائیدہ بچوں اور ماؤں کی شرحِ اموات میں کمی لانا ہے۔ معلوم ہو کہ پروفیسر طارق منصور آر آرٹی سی کے معاون پرنسپل انویسٹیگیٹر بھی ہیں۔ اس پروجیکٹ کو بِل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن نے فنڈ فراہم کیا ہے۔ آرآر ٹی سی ۔اے ایم یو کو انھوں نے 56؍لاکھ روپئے سے زائد دئے ہیں۔ مذکورہ سینٹر اترپردیش کے 7؍اضلاع میں ماں و بچہ کی صحت میں بہتری کے تئیں پابند عہد ہے، جہاں 14؍ضلع و علاقائی اسپتالوں کے ڈاکٹروں کو ان کی مہارت بڑھانے کے لئے ٹریننگ دی جاتی ہے۔ علاقائی اسپتالوں (فرسٹ ریفرل یونٹ )کے ڈاکٹروں کے دوسرے اور تیسرے بیچ کی ٹریننگ پروفیسر طارق منصور اور آر آر ٹی سی علی گڑھ کی نوڈل آفیسر پروفیسر سیما حکیم کی قیادت میں گزشتہ دنوں جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج (جے این ایم سی) کے شعبۂ سرجری میں پوری ہوئی۔
تقریباً 31؍ڈاکٹروں کو آبسٹیٹرک ایمرجنسی مینجمنٹ اور نوزائیدہ بچوں کی صحت سے متعلق پیچیدگیوں کے موضوع پر جے این ایم سی کے ماہرین نے ٹریننگ دی۔پروفیسر فرزانہ کے بیگ، پروفیسر شہلا حلیم، پروفیسر زہرا محسن اور ڈاکٹر نسرین نور نے حمل، زچگی اور ماں و بچہ کی صحت کے مختلف امور پر ڈاکٹروں کو معلومات فراہم کیں۔ ماسٹر ٹرینروں میں ڈاکٹر عظمیٰ فردوس، ڈاکٹر حسین عامر اور ڈاکٹر عائشہ احمد نے دیگر اہم موضوعات کی تربیت دی۔ اس طرح ضلع اسپتالوں اور کمیونٹی ہیلتھ سنٹروں کے ڈاکٹر وں کو ماں و بچہ کی صحت کے سلسلہ میں سروس کا معیار بلند کرنے کی ٹریننگ مل رہی ہے۔ ٹرینروں نے اس بات پر خاص طور سے زور دیا کہ مختلف مہارتوں کے ڈاکٹر ایک ساتھ مل کر کام کریں تاکہ زچگی کے وقت ماں و بچہ کی شرحِ اموات کو قومی سطح پر کم کیا جاسکے۔
فرسٹ ریفرل یونٹ استحکام کی ٹیم لیڈر ڈاکٹر سیما ٹنڈن نے بھی ٹریننگ پروگرام میں شرکت کی اور تربیت یافتگان کی حوصلہ افزائی کی۔ ان کے ہمراہ ڈاکٹر پرشانت مشرا، ڈاکٹر پوروی ورما اور ڈاکٹر امت داس بھی موجود رہے۔ آر آر ٹی سی نوڈل آفیسر نے شعبۂ سرجری کے سربراہ پروفیسر محمد اسلم کا ان کے تعاون کے لئے شکریہ ادا کیا۔ قابل ذکر ہے کہ سنٹر کو تربیت یافتگان سے مثبت ردّ عمل موصول ہوا ہے جس سے دیگر ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل اسٹاف کے اندر بھی ٹریننگ میں جوش وخروش کے ساتھ شامل ہونے کا جذبہ پیدا ہورہا ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *