ریپ اور چھیڑ چھاڑ کا کیس خواتین پر نہیں چل سکتا: سپریم کورٹ

Share Article
Supreme-Court
سپریم کورٹ نے وکیل رشی ملہوترہ کی اس عرضی کو خارج کردیا ہے ، جس میں ریپ کے معاملے میں مردوں کی طرح عورتوں کو بھی سزا دینے کی مانگ کی گئی تھی۔ انھوں نے کہا تھا کہ خواتین کی طرح مرد بھی ریپ اور جنسی استحصال کے شکار ہوسکتے ہیں۔ اس معاملے میں چیف جسٹس دیپک مشرا کی سربراہی والی بینچ نے کہا کہ انڈین پینل کوڈ میںیہ پروویژن خواتین کو محفوظ رکھنے کے لحاظ سے کیے گئے ہیں، جبکہ پوسکو کی دفعہ جنسی مساوات کی بنیاد پر بنا ئی گئی ہے، جس میں18 سال سے کم عمر کے بچے شامل ہیں لیکن یہ دفعات خواتین کو محفوظ کرتی ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *