مودی کے 15 لاکھ والے وعدے پر وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے دیا بڑابیان

Share Article
rajnath-singh

لوک سبھا انتخابات سے پہلے بھارتیہ جنتا پارٹی کے سنکلپ پتر(قرارداد) کو لے کر اپوزیشن پارٹیوں کی طرف سے کئے جا رہے حملوں کا منگل کو مرکزی وزیر راجناتھ سنگھ نے جواب دیا۔ راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ بی جے پی نے کبھی نہیں کہا کہ 15 لاکھ روپے لوگوں کے اکاؤنٹس میں آئیں گے۔
اپوزیشن لیڈروں کے ٹھکانوں پر کی جا رہی چھاپہ ماری پر اپوزیشن کے الزامات کو بھی انہوں نے غلط قرار دیا۔ مرکزی وزیر نے کہا کہ اس کے پیچھے کوئی سیاسی اثر نہیں، ای ڈی ان پٹ پرکارروائی کرنے والی ایجنسی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس کے لئے حکومت کو قصوروار ٹھہرانا غلط ہے۔ یہ کارروائی سالوں سے چل رہی ہے، آج شروع نہیں ہوئی۔ ایسا کسی کی ہدایت پر نہیں کیاجارہا ہے۔جی ہاں، الیکشن کمیشن حکومت سے سیکورٹی مانگتا ہے تو حکومت اس کا تعمیل کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ چھاپہ ماری بھی الیکشن کمیشن کے ہی حکم پر کی گئی ہے، نہ کہ حکومت کی ہدایت پر۔ آپ کو بتا دیں کہ مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ منگل کو ایک نیوز ایجنسی سے بات کر رہے تھے۔

بالاکوٹ حملے پر راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ ایئر اسٹرائک کے دوران اس بات کا خاص خیال رکھا گیا کہ کوئی شہری ہلاک نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ بالاکوٹ پر اپوزیشن حکومت سے سوال کرے، فوج سے ثبوت نہ مانگے۔ فاروق عبداللہ کے بیان پر راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ اگر آرٹیکل 370 کو ہٹا دیا جاتا ہے، تو شاید کشمیر ہندوستان سے الگ ہو جائے گا۔لیکن کشمیر کبھی بھی بھارت سے الگ نہیں ہو گا۔ کوئی بھی طاقت کشمیر کو ہندوستان سے الگ نہیں کر سکتی۔ کشمیر کو کبھی ملک سے الگ نہیں ہونے دیں گے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *